پاکستان تحریک انصاف کا ’یوم تشکر‘، اسلام آباد میں بڑا جلسہ

سپریم کورٹ کی طرف سے پاناما لیکس پر کی تحقیقات کے لیے کمیشن کے قیام کے فیصلے کے بعد تحریک انصاف بدھ کو یوم تشکر منا رہی ہے اور اس سلسلے میں اسلام آباد کے پریڈ گراونڈ میں ایک بڑے جلسے منعقد کیا جا رہا ہے۔

پاکستان تحریک انصاف کے قائد عمران خان نے گزشتہ روز سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد بدھ دو نومبر کو اپنے احتجاج کو یوم تشکر میں بدلنے کا اعلان کیا تھا۔

اس حوالے سے بی بی سی کے نامہ نگار ذیشان ظفر نے پریڈ ایوینیو جہاں یہ ’ یوم تشکر ‘ منایا جا رہا ہے بتایا کہ اس جلسے میں عمران خان سمیت پاکستان تحریک انصاف کے تقریباً تمام رہنما شرکت کر رہے ہیں۔

نامہ نگار کے مطابق جلسہ گاہ میں پی ٹی آئی کے کارکنوں کی بڑی تعداد موجود ہے جن میں راولپنڈی، اسلام آباد اور خیبر پختونخوا سے آنے والے افراد زیادہ تعداد میں ہیں۔

خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک بھی اپنے صوبے سے ایک بڑے جلوس کی قیادت کرتے ہوئے اسلام آباد پہنچنے ہیں۔ گزشتہ روز پنجاب پولیس نے موٹرووے اور دیگر سڑکوں کو بلاک کر کے ان کے قافلے کو اسلام آباد میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی تھی۔

جلسے کے آغاز پر خیبر پختونخوا سے آنے والے رہنماؤں کو ہی خطاب کرنے کا موقع دیا گیا جن میں انھوں نے گزشتہ روز پنجاب پولیس سے اپنے معرکہ آرائی کی تفصیلات سے جلسہ کے شرکاء کو آگاہ کیا۔

پی ٹی آئی رہنماؤں کے علاوہ پاکستان عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید بھی سٹیج پر موجود تھے۔

پریڈ گراؤنڈ میں موجود پی ٹی آئی سپورٹرز کی تعداد کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ لوگوں کی تعداد اتنی تو نہیں جس کا عمران خان کی جانب سے دعویٰ کیا گیا تھا تاہم روایتی طور پر ماضی میں پی ٹی آئی کے جلسوں میں جس طرح سے لوگ شرکت کرتے آئے ہیں یہ جسلہ بھی اس سے مختلف نہیں ہے۔

اطلاعات کے مطابق اس مرتبہ پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے خواتین کے لیے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں اور ان کے لیے بیٹھنے کی جگہ لگا بنائی گئی ہے اور ان کے لیے راستہ بھی الگ رکھا گیا ہے۔

نامہ نگار نے بتایا کہ وہاں موجود کارکنوں میں جوش وخروش تو پایا جاتا ہے تاہم ان میں سے بعض عمران خان کی جانب سے دھرنے کی کال واپس لیے جانے پر مایوس بھی ہیں۔

وہاں موجود پولیس اہلکاروں سے جب پوچھا گیا کہ آج انھیں کیا ہدایت کی گئی ہیں تو ان کا کہنا تھا کہ ’آج ہم صرف حفاظت کے لیے یہاں موجود ہیں۔‘

منگل کو اسلام آباد میں اپنی رہائش گاہ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے عمران خان نے کہا تھا کہ سپریم کورٹ نے پاناما لیکس کی تحقیقات کے لیے عدالتی کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا ہے اور یہ کمیشن 'وزیراعظم کی کرپشن کا احتساب کرے گا۔'

متعلقہ خبریں