الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے

الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے

لائن آف کنٹرول پر ان دنوں جس قسم کی صورتحال ہے اور بھارتی افواج مقبوضہ کشمیر کی جانب سے آزاد کشمیر کے مختلف حصوں پر سیز فائر کی خلاف ورزی کرتے ہوئے جس طرح کشمیری باشندوں کی جان و مال کو نقصان پہنچا رہی ہیں اس پر پاکستان کی وزارت خارجہ نے مسلسل احتجاج اور بھارتی ہائی کمشنر کو وزارت خارجہ طلب کرکے ان بے قاعدگیوں کی طرف توجہ دلانے کی کوشش کی ہے مگر سیز فائر لائن کی اس خلاف ورزی پر شرمندہ ہو کر یہ سلسلہ منقطع کرنے کے الٹا بھارت کے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کا یہ کہنا کہ اگر سیز فائر لائن کی خلاف ورزی کا سلسلہ پاکستان نے بند نہ کیا تو پاکستانی فوج کی ہر کارروائی کا منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔ بھارتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ یہ بات سمجھ سے بالا تر ہے کہ جب بھارت نے پاکستان کے ساتھ بہتر تعلقات کو مزید خوشگوار بنانے سے متعلق ہاتھ بڑھایا تو وہ ایسا کیوں کر رہاہے۔ راج ناتھ سنگھ کے ان خرافات کو اگر فارسی کے ایک مقولے کی روشنی میں دیکھا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ چہ دلا وراست دزدے کہ بکف چراغ دارد' یعنی ایک جانب بھارتی افواج جان بوجھ کر یا پھر اپنے آقائوں کی ہدایات کے مطابق سیز فائر لائن کی سنگین خلاف ورزی پر عمل پیرا ہیں اور پاکستان ان خلاف ورزیوں کی مسلسل شکایات اقوام متحدہ کے متعلقہ حلقوں سے کرتے ہوئے انہیں ثبوت بھی فراہم کر رہا ہے۔ مگر بھارت نہایت ہی ڈھٹائی کے ساتھ الٹا پاکستان پر خلاف ورزیوں کے الزامات لگا کر دنیا کے سامنے جھوٹ بول رہا ہے۔ راج ناتھ سنگھ کی یہ منطق بھی سمجھ سے بالا تر ہے کہ بھارت پاکستان کے ساتھ بہتر تعلقات کو مزید خوشگوار بنانے سے متعلق ہاتھ بڑھا رہا ہے مگر بقول موصوف کے پاکستان ایسا کیوں کر رہاہے تو اس کا ایک جواب تو یہ ہے کہ جب بھارتی افواج ہم پر گولہ باری کریں گی تو کیاہم انہیں پھولوں کے گلدستے پیش کریں گے؟ دوسرے یہ کہ جب سے دونوں کے مابین کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے تب سے بھارتی انتہا پسندوں کی جانب سے پاکستانی فنکاروں کے خلاف احتجاج' انہیں بھارتی فلموں سے نکالنے اور پاکستانی گلو کاروں کے شوز پر پابندیاں لگوانے کے اقدامات کیا دوستی اور تعلقات کو مزید بہتر بنانے کی کوششیں ہیں۔ در اصل اس قسم کی حرکتوں اور خصوصاً سیز فائر لائن پر گولہ باری سے بھارت دنیا کی توجہ بزعم خویش پاکستان کو دہشت گردی کے فروغ میں ملوث ملک کے طور پر کرانا چاہتا ہے۔ مگر اس قسم کے الزامات سے بھارتی عزائم کبھی کامیاب نہیں ہوسکتے اور بھارت کے ظلم و جبر سے بالآخر کشمیری عوام ایک روز آزادی حاصل کرنے میں کامیاب ہو کر ایک آزاد وطن میں سانس لینے میں کامیاب ہو جائیں گے۔

متعلقہ خبریں