سڈنی ٹیسٹ ، اظہر علی اور یونس خان نے منفرد ریکارڈز اپنے نام کر لئے،

ڈیسک: سڈنی ٹیسٹ کے تیسرے روزکھیل کے اختتام پر پاکستان نےپہلی اننگز میں 8وکٹیں گنواکر 271رنز بنالئے،  پاکستان کو اسکور برابر کرنے کیلئے مزید2 پر  267رنز کی ضرورت ہے

اوراس کی صرف 2وکٹیں باقی ہیں۔ یونس خان 136اور یاسر شاہ 5رنز کے ساتھ کریز پر موجود ہیں۔

سڈنی میں  جاری سیریز کے تیسرے اور آخری ٹیسٹ پاکستان ٹیم نے اپنی نامکمل اننگز کو آگے بڑھایا۔

اظہر علی صرف 13رنز کا اضافہ کرکےآؤٹ ہوگئے، انہوں نے 71رنز کی اننگز کھیلی۔

  یونس خان اور اظہر علی نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 146رنز بنائے۔

کپتان مصباح الحق آج بھی بڑی اننگز کھیلنے میں ناکام،انھوں نے اٹحارہ رنز اسکور کیا۔

یونس خان نےعمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی سنچری مکمل کی۔

اسد شفیق بھی گریس  پر زیادہ نہ ٹحہر سکے اور صرف 4رنزبناکر آؤٹ ہوگئے۔

سرفراز احمد  نے 18جبکہ وہاب ریاض 8رنز بناسکے۔

 جبکہ آسٹریلیا کی  جانب سے نیتھن لائیون نے 3، ہیزل ووڈ نے 2جبکہ مچل اسٹارک اور اسٹیو او کوفی نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

 

اظہر علی آسٹریلیا میں سب سے زیادہ رنز بنانے والی پاکستانی اوپنر بن گئے۔۔۔۔۔۔


دورہ آسٹریلیا پر قومی کرکٹر اظہر علی نے ایک اور سنگ میل عبور کر لیا ، وہ کینگروز کے دیس میں ٹیسٹ سیریز کے دوران سب سے زیادہ رنز بنانے والے قومی اوپنر بن گئے ہیں ۔
اس سے قبل یہ اعزاز سابق مایہ ناز ٹیسٹ کرکٹر محسن حسن خان کے پاس 390 رنز کے عوض تھا ۔ اظہر علی نے ان کا یہ ریکارڈ آسٹریلیا کے خلاف تیسرے ٹیسٹ کے تیسرے روز توڑا ۔
 
یونس خان نے آسٹریلیا کے خلاف سڈنی میں کھیلے جا رہے ٹیسٹ میچ میں سنچری بنا کر نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا۔

سڈنی میں کھیلے جا رہے سیریز کے تیسرے اور آخری ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن یونس خان نے ناتھن لایون کو چوکا لگا کر کیریئر کی 34ویں سنچری اسکور کی جس کے ساتھ ہی وہ دنیا کے ان تمام ملکوں میں سنچری بنانے والے کھلاڑی بن گئے ۔

اب تک دنیا کے گیارہ ملکوں میں ٹیسٹ کرکٹ کھیلی گئی ہے جس میں ویسٹ انڈیز، ہندوستان، جنوبی افریقہ، نیوزی لینڈ، آسٹریلیا، متحدہ عرب امارات، بنگلہ دیش، جنوبی افریقہ، انگلینڈ، زمبابوے اور پاکستان شامل ہیں۔

دنیا کے اور کسی بلے باز کو یہ مقام حاصل نہیں کہ وہ ان تمام گیارہ ملکوں میں سنچری بنا سکا ہو۔

اس سے قبل ہندوستان کے عظیم بلے باز راہول ڈراوڈ کو ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے والے تمام ملکوں میں سنچری بنانے کا ریکارڈ حاصل تھا۔

یہ یونس خان کے کیریئر کی 34ویں سنچری تھی اور وہ سب سے زیادہ سنچریاں بنانے والے بلے بازوں کی فہرست میں چھٹے نمبر پر آ گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں