افغان مونا لیزا ’شربت گلہ ‘ کو ملک بدر کردیا گیا

افغان مونا لیزا ’شربت گلہ ‘ کو ملک بدر کردیا گیا

شربت گلہ ملک بدر '' سبز آنکھیں کبھی ہنسائیں کبھی رلائیں''

پشاور: سبز آنکھوں کی وجہ سے شہرت حاصل کرنے والی افغان خاتون جنہیں افغانی مونا لیزا  بھی کہا جاتا ہے ’شربت گلہ ‘ کو ملک بدر کرکے افغان حکام کے حوالے کردیا گیا ہے۔

جعلی دستاویزات کے ذریعے پاکستانی شناختی کارڈ حاصل کرنے والی افغان خاتون ’شربت گلہ ‘ کو گزشتہ دنوں پشاور کی عدالت کی جانب سے مذکورہ جرم ثابت ہونے پر افغان شہری شربت گلہ کو 15 دن قید اور ایک لاکھ 10 ہزار روپے جرمانے کی ادائیگی کے بعد ملک بدر کرنے کا حکم دیا گیا تھا جس کے بعد آج شربت گلہ کو لیڈی ریڈنگ اسپتال سے افغان حکام کے حوالے کردیا گیا۔ 

شربت گلہ کو طبیعت خراب ہونے کے باعث اسپتال لیجایا گیا تھا جہاں ڈاکٹرز کے معائنے اور مختلف ٹیسٹوں کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ شربت گلہ ہیپاٹائیٹس سی کی مریضہ ہے۔ 

اس دوران خیبر پخوتنخواہ کی صوبائی حکومت نے انسانی بنیادوں پر حکومت پاکستان سے شربت گلہ کی ملک بدری کی مدت میں توسیع کرنے کا فیصلہ بھی کیا لیکن شربت گلہ کی جانب سے افغانستان واپسی کی خواہش اور درخواست پر شربت گلہ کو افغان حکام کے حوالے کر دیا۔

شربت گلہ کی وجہ شہرت 1985 میں نیشنل جیوگرافک رسالے میں چھپنے والی اس  کی وہ مشہور  تصویر ہے جس کے بعد شربت گلہ کو افغانستان کی مونالیزا کہا جات ہے 

متعلقہ خبریں