ٹرمپ کی جیت، کینیڈین امیگریشن کی ویب سائٹ کریش کر گئی

ٹرمپ کی جیت، کینیڈین امیگریشن کی ویب سائٹ کریش کر گئی

امریکی میں صدارتی انتخاب کے دوران کینیڈا کی امیگریشن کی ویب سائٹ پر بڑے پیمانے پر صارفین کی تعداد سے وفقے وقفے سے اس میں خرابی کا سامنا رہا۔

اس حوالے سے یہ قیاس کیا جانے لگا کہ ایسا ڈونلڈ ٹرمپ کی کامیابی کے بعد بڑی تعداد میں امریکی شہریوں کی جانب سے اس ویب سائٹ تک رسائی حاصل کرنے کے بعد ہوا۔

کینیڈا کی سٹیزن شپ اینڈ امیگریشن سروس (سی آئی سی) کے حکام سے فوری طور پر اس پر موقف حاصل نہیں کیا جاسکا۔

تاہم کچھ ماہرین کا کہنا ہے اس کی وجوہات کچھ اور ہوسکتی ہیں۔

یونیورسٹی آف سرے کے پروفیسر ایلن ووڈ کہتے ہیں: 'یہ محض ایک غیرمعمولی اتفاق ہوسکتا ہے۔'

تاہم اس سے قطع نظر سوشل میڈیا پر اس حوالے سے بہت زیادہ بیان بازی کی جارہی ہے۔

امریکی انتخاب کے دوران خرابی کا واحد مسئلہ نہیں ہے۔

منگل کی شام امریکی ریاست کولوراڈو میں حکام ووٹر رجسٹرشن ڈیٹابیس تک آدھے گھنٹے تک رسائی حاصل کرنے میں ناکام رہے تھے۔

اس وقت کولوراڈو کی سیکریٹری سٹیٹ لین برٹیلز نے ٹویٹ کیا تھا کہ 'کلرک ڈاک بیلٹس کو پراسس سے نہیں کرسکتے جن پر مصدقہ دستخط کی ضرورت ہے۔ '

ان کا کہنا تھا کہ 'بدقسمتی سے ہمارا سسٹم بار بار ڈاؤن ہو رہا ہے۔ '

شمالی کیرولینا کی سٹیٹ بورڈ آف الیکشنز کو بھی کئی جگہوں پر 'تکنیکی مسائل' کی وجہ سے الیکٹرانک ووٹنگ سے پیپر ووٹنگ پر منتقل ہونا پڑا۔

بعدازاں یہ اطلاعات سامنے آئی کہ مسئلے کے حل تک 93000 ووٹوں کے اپ لوڈ ہونے میں تاخیر ہوئی۔

اس قسم کی بھی غیرمصدقہ اطلاعات ہیں کہ کچھ مشینیوں نے امیدواروں کے ووٹ تبدیل کر دیے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے فاکس نیوز کو بتایا تھا کہ 'مشینوں میں آپ رپبلکن کا انتخاب کرتے ہیں اور وہ رجسٹر ڈیموکریٹ کے طور پر کرتا ہے، آج اس قسم کی بہت سے شکایات موصول ہوئی ہیں۔'

بہرحال حکام کی جانب سے اس قسم کی مسائل کے بارے میں ابتدائی اطلاعات کو 'صارف کی غلطی' قرار دیا گیا تھا۔

اس کے علاوہ 'ورج' ویب سائٹ کے مطابق ہلیری کلنٹن کی ٹیکسٹ میسج اور ٹیلی فون کے ذریعے ووٹروں کو مائل کرنے کی مہم کو بھی کچھ وقت کے لیے سائبر حملے کا سامنا رہا۔

متعلقہ خبریں