اس شاعری میں عزت سا دات بھی گئی

اس شاعری میں عزت سا دات بھی گئی

کیا عجب اتفاق ہے جب بھارتی فضائیہ نے 1965ء میں لاہور پر فضائی حملہ کیا تھا اور ایم ایم عالم نے فضائی جنگوں کی تاریخ میں ایک نیا باب لکھ کر چند ہی لمحوں میں یکے بعد دیگرے بھارتی جہازوں کو نشانہ بنا یا تھا ۔ مگر اس کے ساتھ اہل لاہور کا جوش بھی دیکھنے کے لائق تھا جب وہ اس حملے سے بچنے کی خاطر محفوظ جگہوں یا خندقوں میں پناہ لینے کے بجائے گھروں کی چھتوں پر چڑھ کر بھارتی طیاروں کو گرتے ہوئے دیکھ کر خوشی سے نعرے لگارہے تھے۔ یہ ایک پیغام تھا اس بزدل دشمن کیلئے جس نے صرف ایک رات کیلئے 6ستمبر کو بی آبی نہر پار کرنے کی غلطی کرکے ہماری افواج کی جرات وشجاعت کا غلط اندازہ لگایا تھا مگر اس کو منہ کی کھانی پڑی تھی اور پھر مارچ کی 5تاریخ تھی جب لاہورہی کے قذافی سٹیڈیم میں ایک بار پھر جوش و جنون کا مظاہرہ انسانی تاریخ نے دیکھا مگر اس روز صرف لاہور کے ہی نہیں پورے پاکستان سے آئے ہوئے پاکستانی شہریوں نے یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے دہشت گردوں کی سوچ کو خاک چاٹنے پر مجبور کر دیا اور دنیا کو امن ، محبت اور بھائی چارے کا پیغام دیااور یہ کہ وہ باہر سے مسلط کی ہوئی دہشت گردی کو مکمل طور پر رد کرتے ہیں ۔لاہور میچ شفٹ کرنے سے پہلے ہی ایک مخصوص لابی نے اس پر منفی تبصرے اور اشارے دینے شروع کر دیئے تھے ، یہاں تک کہ اسے پاگل پن تک کہا گیا ۔ اس رویئے نے دنیا بھر کو انتہائی منفی پیغام روانہ کر دایا تھا۔ مگر امن کی بحالی سے جنون کی حدتک عشق رکھنے والوں نے طے کر لیا تھا کہ پی ایس ایل کا فائنل ہر قیمت میں لاہور ہی میں منعقد کر کے پاکستان کے بارے میںمنفی تاثر کو زائل کرنا ہی ہے ، پھر جب فائنل میچ کیلئے کوششوں کا آغاز کرتے ہوئے غیر ملکی کھلاڑیوں کوپاکستان آنے پر آمادہ کرنے کا عمل شروع کیا گیا توجہاں دوسری آوازیں اٹھ رہی تھیں وہاں عمران خان کی مخالفانہ سعی اس لیے قابل ذکر بن کر اس ساری تگ و دوکو شکست و ریخت سے دوچار کرنے کا باعث دکھائی دے رہی تھی کہ نہ صرف وہ خود ایک کرکٹ لیجنڈرہے ہیں بلکہ اب ایک سیاسی لیڈر کے طور پر بھی ان کی آواز کو غور سے سنا جاتا ہے مگر سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ صرف چند روز پہلے ہی فائنل میچ کے لاہور میں انعقاد کے حوالے سے مثبت خیالات کا اظہار کرنے کے بعد موصوف نے یک لخت یو ٹرن لیکر کیوں اسے پاگل پن سے تعبیر کیا ، جس کے بعد پی ایس ایل کے ذمہ داران اور فائنل کی سمت بڑھنے والی ٹیموں کے مالکان اور ساتھی کھلاڑیوں کی تمام سعی رائیگاں جانے کے خطرات سے دوچار ہونے لگی تبصرہ نگار اس حوالے سے اپنے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اس کی مختلف تاویلات پیش کر رہے تھے مگر شاید اس نکتے پر کسی نے توجہ نہیں تھی کہ عمران خان جو یہ مخالفت کرتے ہوئے انتہائی سطح تک چلا گیا تھا یہ دراصل موصوف کی پی ایس ایل کے سر براہ نجم سیٹھی کے خلاف ذہن و دل میں شدید بغض کی وجہ سے تھا ، یہ عمران خان ہی تھے جنہوں نے نجم سیٹھی پر پہلے 35پنکچر کا الزام لگایا اور بعد میں جب عدالت میں کوئی ثبوت فراہم نہیں کر سکے تو اسے ایک سیاسی بیان سے تشریح دی ، اور جب نجم سیٹھی نے اس حوالے سے اپنی پوزیشن صاف کرنے کیلئے عدالت میں درخواست دے کر مقدمہ قائم کیا تو وہ مقدمہ غیر معینہ مدت تک ملتوی کرنے کا حکم دیا گیا ہے ، یوں عمران خان کو خدشہ ہے کہ اگر یہ مقدمہ چلتا ہے تو کہیں اس کو شکست نہ ہو جائے ، بہرحال یہ تو مقدمے کی سماعت اور فیصلے کے بعد ہی معلوم ہو سکے گا کہ عدالت دونوں جانب سے دلائل کے بعد کیا فیصلہ سنائے گی ۔لیکن نجم سیٹھی کے حوالے سے جو بغض و عنا د ممکنہ طور پر عمران خان کے ذہن میں ہے اسی کی وجہ سے عمران خان نے نہ صرف فائنل کے لاہور میں انعقاد کو پاگل پن سے تعبیر کیا بلکہ میچ کے انعقاد کے بعد گزشتہ روز جس طرح ایک بار پھر عمران خان نے غیر ملکی کھلاڑیوں کے بارے میں نامناسب الفاظ استعمال کر کے ایک طوفان کھڑا کر دیا ہے ، اس پر ملکی سطح پر عمران خان شدید تنقید کا نشانہ بن رہے ہیں ، مگر یہ وہی صورتحال ہے کہ آبیل مجھے مار ، جو الفاظ عمران خان نے استعمال کئے ہیں اگر چہ اس کی موصوف نے تاویل دیتے ہوئے کہا کہ یہ تو لاہور کلب میں عام طور پر استعمال ہوتے ہیں مگر وہ یہ بات بھول گئے ہیں کہ ملکی سطح پر ان الفاظ کو جو معنی پہنائے جارہے ہیں وہ یقینا توہین آمیز کے زمرے میںشمار ہوتے ہیں۔ اور اب تو سوشل میڈیا پر بھی (حکومتی حلقوں سے قطع نظر ) ان الفاظ پر شدید احتجاج کے ساتھ پرانے کلپس میں ان لوگوں کی تصاویر اور کار کردگی کی تاریخ دکھا کر عمران خان کے رویئے کو تنقید کی سان پر رکھا جارہا ہے۔ اگر عمران خان اور اس کے بارے میں صفائیاں دینے والے 5تاریخ کے جوش و خروش کوہی ذہن میں رکھ لیتے تو کچھ کہنے کی بجائے خاموش ہی رہتے تو بھی اپنی عزت بچانے میں کامیاب ہو جاتے مگر موقع بے موقع بولنے والوں کیلئے یہی تو کہا جا سکتا ہے کہ 

اس شاعری میں عزت سادات بھی گئی

متعلقہ خبریں