علاج معالجے کی بہتری یہ ہے ؟

علاج معالجے کی بہتری یہ ہے ؟


ہندکواور اردو ڈراموں کے نامور فنکار افتخار قیصر کو لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں داخلے کی جگہ نہ ملنے پر کھلے آسمان تلے پڑے رہنے پر مجبور ہونے کامنظر اس لئے میڈیا کی نظروں میں آگیا کہ وہ فنکار برادری سے وابستہ تھے وگرنہ اس طرح کے مظاہر روز دیکھنے کو ملتے ہوں گے ۔ یہ امر سمجھ سے بالاتر ہے کہ ایل آر ایچ کے منتظمین کو اس امر کا کیسے اندازہ نہ تھا کہ ان کا افتخار قیصر جیسے فنکار سے اس طرح کا سلوک چھپ سکے گا ۔ افتخار قیصر ہی نہیں اس وقت متعدد دیگر فنکار اور مختلف شعبوں میںنمایاں خدمات انجام دینے والی شخصیات گو شہ گمنا می میں بے یارو مدد گار پڑے ہیں مگر ثقافت کے نام پر کروڑوں کے فنڈ ز لینے والے محکمے کو بالخصوص اور حکومتی اداروں کو بالعموم ان کی کوئی پرواہ نہیں ۔ ہسپتالوں میں بہتر علاج معالجے کا جوچہرہ اس واقعے کے تناظر میں دیکھا جا سکتا ہے صوبائی وزیر صحت کیلئے اسے کافی ہونا چاہیئے ۔ توقع کی جانی چاہیئے کے بار بار سامنے آنے والی ناکامیوں اور حالات کا ادراک کیا جائے گا اور حکومت ہسپتالوں میں رنگ و روغن اور مہنگی ٹائلز لگوا کر بہتری کا تاثر دینے کے بجائے ہسپتالوں میں علاج و معالجے کی سہولتوں کی بہتری کو یقینی بنانے پر توجہ دے گی۔ بزرگ شہریوں کیلئے علاج معالجے کی خصوصی انتظامات یقینی بنانے کی بھی اشد ضرورت ہے ۔

متعلقہ خبریں