سپریم کورٹ میں پاناما پیپرز کیس ،سماعت کل تک ملتوی

سپریم کورٹ میں پاناما پیپرز کیس ،سماعت کل تک ملتوی

ڈیسک: سپریم کورٹ میں پاناما پیپرز کی تحقیقات کیلئے دائر درخواستوں کی سماعت کل تک ملتوی کردی گئی۔ شریف خاندان کے وکیل کل بھی اپنے دلائل جاری رکھیں گے، جبکہ پی ٹی آئی، شیخ رشید اور جماعت اسلامی کے وکیل کی جانب سے دلائل مکمل کرلیئے گئے ہیں۔

وزیر اعظم نواز شریف کے وکیل مخدوم علی خان کا کہنا ہے کہ درخواست گزاروں کی جانب سے وزیراعظم اور ان کی فیملی پر مختلف الزامات لگائے گئے۔ عدالت میں موقف اختیار کیا گیا کہ تحائف دینے والے کا ٹیکس نمبر موجود نہیں، جبکہ حسین نواز کا ٹیکس نمبر موجود ہے۔ وزیراعظم نے اپنے خطاب میں بچوں سے متعلق کاروبار شروع کرنے کا لفظ استعمال نہیں کیا، جبکہ انہوں نے کہا کہ ان کے والد نے بیرون ملک اسٹیل مل لگائی۔

سماعت کے دوران جسٹس عظمت کا ریمارکس دیتئے ہوئے کہنا تھا کہ کیس یہ ہے کہ وزیر اعظم نواز شریف نے تقریر میں غلط بیانی کی، اگر غلط بیانی نہیں ہوئی تو آپ کو ثابت کرنا ہے، ہم تقریر کو غلط نہیں مانتے لیکن اگر کوئی چیز چھپائی گئی ہے تو پھر اسے آدھا سچ مانیں گے۔

اس موقع پر جسٹس اعجاز افضل کا کہنا تھا کہ معصومانہ خطا ہے تو نظرانداز کیا جا سکتا ہے، لیکن جان بوجھ کر کی جانے والے خطا کے سنگین نتائج ہوں گے۔

جسٹس کھوسہ نے سوال کیا کہ بتایا جائے کیا نواز شریف کا بزنس اور رقم سے کوئی تعلق نہیں، کیا نواز شریف اپنے خاندانی کارروبار کا حصہ ہیں۔ اگر تعلق نہیں تو پھر لندن فلیٹس کی منی ٹریل کیسے ہوئی۔ قطری خط لندن فلیٹس کو لنک کرتا ہے لیکن نواز شریف نے اس حوالے سے تقریر میں کچھ نہیں کہا۔

متعلقہ خبریں