ناقص کارکردگی پر آسٹریلین چیف سلیکٹر مستعفی

ناقص کارکردگی پر آسٹریلین چیف سلیکٹر مستعفی

ڈیسک: آسٹریلین ٹیم کی ناقص کارکردگی اور مسلسل پانچویں ٹیسٹ میچ میں شکست پر دلبرداشتہ چیف سلیکٹر روڈ مارش نے فوری طور پر عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

69 سالہ سابق عظیم وکٹ کیپر نے منگل کو جنوبی افریقہ کے ہاتھوں شکست کھانے والی ٹیم کی ناقص کارکردگی پر عہدہ چھوڑنے کا اعلان کیا جو ہوم گراؤنڈ پر آسٹریلیا کی جنوبی افریقہ کے ہاتھوں لگاتار تیسری سیریز میں ناکامی ہے۔

روڈ مارش نے اپنے بیان میں کہا کہ یہ میرا ذاتی فیصلہ ہے اور کرکٹ آسٹریلیا میں نے کسی نے مجھ پر دباؤ ڈالا اور حتیٰ کہ کسی نے مجھے ایسا کرنے کا مشورہ تک نہیں دیا۔

کرکٹ آسٹریلیا نے کہا کہ بدھ کو ایک غیر معمولی اجلاس ہو گا جس میں عبوری متبادل کا اعلان کیا جائے گا۔

تاہم جنوبی افریقہ کے ہاتھوں شکست کے بعد استعفے دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب کرکٹ آسٹریلیا کو نئی تازہ سوچ کی ضرورت ہے اور ہماری ٹیسٹ ٹیم مستقبل کی تیاری کرتے ہوئے کچھ نئے چہروں کو خوش آمدید کہے۔

روڈ مارش نے کہا کہ آسٹریلین کرکٹ کا وسیع تر مفاد ہمیشہ میری دلی خواہش رہی ہے اور اسی وجہ سے میں نے یہ فیصلہ کیا ہے۔ مارش کے استعفے کے بعد آسٹریلیا کے سلیکشن پینل میں مارک وا، ٹریور ہونز اور کوچ ڈیرن لیمن بچے ہیں اور حالیہ شکستوں کے بعد پینل کیلئے نوکریاں بچانا مشکل نظر آتا ہے۔

جنوبی افریقہ کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ کی پہلی اننگز میں 85 رنز پر ڈھیر ہونے والی آسٹریلین ٹیم دوسری اننگز میں مثبت آغاز کے باوجود صرف 40 رنز کے اضافے سے آٹھ وکٹیں گنوا کر اننگز اور 80 رنز کی شکست سے دوچار ہوئی۔

ہوبارٹ میں شکست کے بعد آسٹریلیا سیریز پہلے ہی گنوا چکا ہے لیکن اب اسے تاریخ میں پہلی بار ہوم گراؤنڈ پر وائٹ واش کا خطرہ درپیش ہے۔

اس سے قبل آسٹریلیا کو 2013 میں انگلینڈ اور ہندوستان کے ہاتھوں لگاتار چھ ٹیسٹ میچوں میں شکست ہوئی جس کے بعد کوچ مکی آرتھر نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

1970 سے 1984 تک آسٹریلیا کی نمائندگی کرتے ہوئے 96 ٹیسٹ میچ کھیلنے والے روڈ مارش کو 2014 میں جان انوے ریرٹی کی جگہ چیف سلیکٹر بنایا گیا تھا۔

متعلقہ خبریں