آبدوز کے بعد بھارتی ڈرون

آبدوز کے بعد بھارتی ڈرون

گزشتہ جمعہ کو پاکستان کی سمندری حدود کے جنوبی علاقے میں بھارتی آبدوز کی در اندازی کے واقعے کے صرف ایک روز بعد رکھ چاکری سیکٹر کی حدود میں بھارتی جاسوس ڈرون کے60میٹر اندر آنے پر پوسٹ پر تعینات جوانوں نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے ڈرون کو واپس جانے کی مہلت نہ دیتے ہوئے مار گرایا۔ ادھر کنٹرول لائن پر بھارتی افواج کی وحشیانہ گولہ باری سے ایک ہی خاندان کے چار بچے شہید ہوگئے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق بھارتی مورچوں سے مسلسل گولہ باری جاری رہی جس کا پاکستانی افواج نے مسکت جواب دیتے ہوئے بالآخر بھارتی توپوں کو خاموش کرنے پر مجبور کردیا۔ اس صورتحال سے سرحدی علاقوں کے لوگ گھروں میں محصور اور تعلیمی ادارے بند ہوگئے ہیں۔ ہسپتالوں میں ایمر جنسی نافذ کردی گئی ہے۔ آرمی چیف نے سلیمانکی سیکٹر کے دورے کے موقع پر پاک فوج کے جوانوں کے عزم و حوصلے کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاک فوج جنگی صلاحیتوں سے لیس اور روایتی جنگ کے لئے تیار ہے۔ دوسری جانب گلگت میں پارلیمانی شخصیات اور صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے لیفٹیننٹ جنرل ظفر اقبال ملک نے کہا ہے کہ حالیہ کشیدگی میں کنٹرول لائن پر سیز فائر کی خلاف ورزی پر بھارت کے 40فوجی ہلاک ہوئے۔ امر واقعہ یہ ہے کہ بھارتی حکمران پاکستان کے خلاف کئی محاذوں پر سرگرم ہیں۔ ایک جانب وہ مقبوضہ کشمیر میں آزادی کی لہر اٹھنے کے بعد الزامات عائد کرکے نہتے کشمیریوں پر توڑے جانے والے مظالم کو دہشت گردی کے خلاف جائز کارروائی کے طور پر پیش کرنا چاہتا ہے دوسری طرف پاک چائنہ اقتصادی راہداری منصوبے کی تکمیل کے بعد پاکستان اور چین کے تعلقات میں نئی جہات اور چین کے تجارتی قافلوں کی یورپ اور مشرق وسطیٰ تک آسان رسائی سے بھارت کے خطے پر اقتصادی قبضے کے خواب جس طرح چکنا چور ہونے کے امکانات سامنے آرہے ہیں ان سے بھارتی حکمرانوں کی نیندیں اچاٹ ہوگئی ہیں اور اس کی کوشش ہے کہ سی پیک کا منصوبہ کسی طور پر تکمیل پذیر نہ ہوسکے۔ خاص طور پر چند روز پہلے جس طرح چین سے پہلا تجارتی قافلہ کنٹینروں کی صورت میں بحری راستے سے گوادر بندر گاہ سے روانہ ہوا تو اس موقع پر افتتاحی تقریب میں وزیر اعظم نواز شریف' آرمی چیف جنرل راحیل شریف اور پاکستان میں چین کے سفیر بھی موجود تھے۔ یہ صورتحال بھارتی حکمرانوں کے لئے کیسے برداشت کے قابل ہوسکتی تھی اس سے پہلے بھارت نے ایران کی بندر گاہ چاہ بہار میں سرمایہ کاری اور چاہ بہار سے افغانستان تک شاہراہ کی تعمیر کے لئے اربوں ڈالر کے فنڈز مختص کئے تاکہ گوادر پورٹ کے مقابلے میں متبادل بندر گاہ کو ترقی دے کر یورپ تک تجارتی راہداری کو مستحکم کیا جائے مگر دنیا جانتی ہے کہ گوادر بندرگاہ کے مقابلے میں چاہ بہار کی بندر گاہ دور تک سمندر کے اندر ہے اور اس کے مقابلے میں گوادر عالمی تجارت کے لئے آسان گزر گاہ پر واقع ہے۔ یہاں تک کہ خود ایران نے بھی سی پیک منصوبے میں شرکت پر آمادگی کا اظہار کیا ہے۔ اس سے بھارتی حکمرانوں کا تلملانا سمجھ میں آتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ وہ ایک تیر سے کئی شکار کرنے کے لئے نہ صرف کشمیر کنٹرول لائن پر بلا جواز فائرنگ سے ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کر رہا ہے بلکہ سی پیک کو نقصان پہنچانے کے لئے آبدوز بھیج کر جاسوسی کے جال بچھانے میں مصروف تھا مگر پاکستان کی مستعد بحریہ نے اس کے خواب چکنا چور کردئیے۔ اب وہ فضائی جاسوسی کے لئے ڈرون طیاروں سے کام لینا چاہتا ہے مگر پاکستانی جوانوں نے یہ چال بھی بری طرح سے ناکام بنا کر اسے واضح پیغام دے دیا ہے کہ اسے اگر اپنی افواج کی عددی برتری پر ناز ہے تو پاکستانی افواج کی تربیتی برتری کے مقابلے میں اس کی ہر کوشش اور خواہش ہیچ ہے۔ بہر حال ان تمام حرکتوں سے وہ پاکستان کو انگیخت کرکے چاہتا ہے کہ پاکستان کسی بڑے حملے میں پہل کرے اور اسے بہانہ مل جائے کہ خدا نخواستہ وہ ایٹمی ہتھیاروں سے لیس ہو کر پاکستان پر چڑھ دوڑے۔ یاد رہے کہ بھارت کے وزیر دفاع نے چند روز پہلے کہا تھا کہ سرحدی کشیدگی بڑھنے کی صورت میں ایٹمی ہتھیار پہلے استعمال نہ کرنے کی پیشکش واپس لے سکتے ہیں جس پر جمعہ کے روز پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان نے ہفتہ وار پریس بریفنگ میں کہا تھا کہ بھارتی وزیر دفاع کا بیان دوہرے معیار کا عکس ہے۔ پہلے ایٹمی ہتھیار استعمال نہ کرنے کا بھارتی ڈاکٹر ائن ڈھونگ ہے اور یہ بیان نہ صرف خطے بلکہ عالمی امن کے لئے خطرہ ہے۔ پاکستان ایٹمی ہتھیار پہلے استعمال نہ کرنے کے اصول پر قائم ہے اور قائم رہے گا۔ دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے کہا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ کشیدگی میں اضافہ نہیں چاہتا لیکن اگر سیز فائر کی خلاف ورزی کی گئی تو پاکستان اس کا بھرپور جواب دے گا۔ درایں حالات پاکستان کو بھارتی چالوں سے ہوشیار رہنا چاہئے اور اس کی زیادتیوں کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کرنی چاہئے تاکہ بھارت کی ہر قسم کی سازشوں کو ناکامی سے دو چار کیا جاسکے۔

متعلقہ خبریں