پاناما لیکس کیس کےفیصلہ سے ملک میں انقلاب آئے گا،عمران خان

پاناما لیکس کیس کےفیصلہ سے ملک میں انقلاب آئے گا،عمران خان

ویب ڈیسک:پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے کہا ہے کہ ملک  بھر میں دہشتگردوں کے خلاف ایک ساتھ آپریشن ہوتا تو اتنا نقصان نہیں ہوتا۔

پشاور پریس کلب میں پریس کانفرنس کے دوران عمران خان نے کہا کہ  پشاور  ات پی ایس سانحہ کے بعد تمام سیاسی جماعتوں نے نیشنل ایکشن پلان پردستخط کئے تھے، اس کے تحت ملک کے تمام صوبوں میں پولیس کو غیر سیاسی اور فعال کرنا تھا ، ہمیں فخر ہے کہ خیبر پختونخوا میں پولیس کوغیرسیاسی کردیا گیا ہے۔

 پاناما لیکس کے حوالے سے عمران خان کا کہنا تھا کہ  پاناما لیکس کیس کے فیصلے سے  ملک میں انقلاب آئے گا،پہلی بار چیف ایگزیکٹیو کی تلاشی لی گئی، وزیر اعظم صادق اور امین نہیں رہے۔

عمران خان نے فاٹا کے حوالے سے کہا فاٹا کو وہ توجو نہیں دی گئی جو دینی چاہیے تھی خیبر پختونخوا اور فاٹا کو ملانے کا منصوبہ ضرب عضب کے فورا بعد شروع ہوجانا چاہئے تھا۔

عمران خان نے لاہور میں ہونے والے ڈیفنس دھماکے کی شدید مذمت کی ہے۔اور کہا کہ مناسب ہوتا وزیر اعظم آپریشن رد الفساد پر تمام صوبوں کو اعتماد میں لیتے۔دہشتگردی سے نمٹنے کے لئے غیر معمولی حکمت عملی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ دہشتگردی کے انسداد کے لئے روایتی طریقوں سے ہٹ کر اقدامات اٹھانا ہوں گے۔ دہشتگردی کے مقابلے کیلئے کم از کم پولیس کو فوری خود مختاری اور سیاسی مداخلت سے پاک کرنا ہوگا۔

عمران خان نے کہا کہ داخلی اور خارجی طور پر پاکستان دشمن عناصر کی سرگرمیوں پر کڑی نگاہ رکھنے اور ان کے منصوبوں کو خاک میں ملانا انتہائی اہم ہے۔

متعلقہ خبریں