سپریم کورٹ :پانامالیکس سےمتعلق درخواستوں کی سماعت ،

سپریم کورٹ :پانامالیکس سےمتعلق درخواستوں کی سماعت ،

 ڈیسک: سپریم کورٹ آف پاکستان میں پانامالیکس سےمتعلق درخواستوں کی سماعت جاری ،مریم نواز کے وکیل اپنے دلائل دے رہے ہیں۔

  سپریم کورٹ آف پاکستان میں جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے پانچ رکنی لارجر بینچ پاناماکیس کی سماعت کر رہا ہے۔وزیراعظم نوازشریف کی بیٹی مریم صفدر کےوکیل شاہد حامد پاناماکیس کی سماعت کے آغاز پراپنے دلائل دے رہےہیں۔

پاناماکیس میں سماعت کے آغاز پر شاہد حامد نے دلائل دیتے ہوئےکہاکہ مریم صفدرکی جانب سےداخل جواب پرمیرےدستخط ہیں ور مریم صفدر نے مجھے اختیار دیا ہے۔اور کہا اگر کوئی ٹیکس ریٹرن نہ جمع کرائے اسے 28 ہزار روپے جرمانہ ادا کرنا پڑتا ہے.

جسٹس گلزار احمد نے سوال کیا کہ میاں شریف کی وفات کےبعدان کی جائیدادکاکیابنا؟

جس پر مریم نواز کے وکیل شاہدحامدنےکہاکہ شریف خاندان میں جائیداد کےحوالے سے سےجھگڑایاتنازع نہیں ہے۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہاکہ کیایہ ممکن ہے میاں شریف کی وفات کے بعدوراثتی جائیدادکی تقسیم سےمتعلق ایک دوروزمیں آگاہ کیاجاسکے۔

 واضح رہے کہ جماعت اسلامی ،پی ٹی آئی اور عوامی لیگ کے وکیل اپنے دلائل مکمل کر چکے ہیں۔

in  progress

متعلقہ خبریں