Daily Mashriq

 سلوواکیہ میں پہلی خاتون عہدہ صدارت کیلئے منتخب

سلوواکیہ میں پہلی خاتون عہدہ صدارت کیلئے منتخب

براتیسلاو: حکومت کی سخت ناقد اور بدعنوانی کےخلاف متحرک خاتون زوزانا کیپوٹوا انتخابات میں کامیابی کے بعد مشرقی یورپ کے ملک سلوواکیہ کی پہلہ خاتون صدر بن گئیں۔

صدارتی انتخاب میں ماحولیاتی وکیل زوزانا نے 58.40 فیصد ووٹ جبکہ ان کے مخالف امیدوار اور یورپی یونین کے توانائی کمشنر ماروس سیفچووک نے 41.59 فیصد ووٹ حاصل کیے۔

نو منتخب صدر کا کہنا تھا کہ ’انتخابی نتائج اس بات کی غمازی کرتے ہیں کہ آپ اپنے مخالفین پر حملہ کیے بغیر بھی کامیابی حاصل کرسکتے ہیں، اس کے ساتھ انہوں نے یہ بھی امید ظاہر کی کہ یہ روایت یورپی اور سلوواکیہ کی پارلیمنٹ میں ہونے والے انتخابات میں بھی برقرار رکھی جائے گی۔

دوسری جانب ان سے شکست کھانے والےحکمران جماعت کے امیدوار ماروس سیفچووک نے انہیں مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ سلوواکیہ کی پہلی خاتون صدر گلدستے کی حقدار ہیں‘۔

مشکلات کا سامنا کرنے والیں زوزانا کیپوٹوا نے 2016 میں اپنے آبائی علاقے پیزنوک میں لینڈ فل کا منصوبہ روکنے پر کامیابی میں ایوارڈ بھی حاصل کیا تھا۔

فروری 2018 میں ایک تحقیقاتی صحافی کے قتل پر وہ 54 لاکھ آبادی والے وسطی یورپی ملک میں ہزاروں افراد کو سڑکوں پر لانے میں کامیاب ہوئی تھیں۔

عہدہ صدارت سے سبکدوش ہونے والے صدر اندریج کسکا نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سلوواکیہ اخلاقی بحران کا شکار ہے جسے زوزانا کیپوٹوا جیسی صدر کی ضرورت ہے، بہت سے ممالک ہم پر رشک کریں گے کہ ہم نے جو صدر منتخب کیا ہے وہ صدارتی اقدار مثلاْ شائستگی کو ظاہر کرتا ہے۔

دوسری جانب اس حوالے سے سلوواکیہ کے وزیراعظم پیٹر پیلگرینی جو حکمراں جماعت سمیر ایس ڈی سے تعلق رکھتے ہیں، نے کہا کہ انہیں نومنتخب صدر سے تعمیری تعاون کی توقع ہے۔

متعلقہ خبریں