Daily Mashriq


پیپلزپارٹی کا نیب میں زیر تفتیش وزیر اعلیٰ کے پی کے کے استعفی کا مطالبہ

پیپلزپارٹی کا نیب میں زیر تفتیش وزیر اعلیٰ کے پی کے کے استعفی کا مطالبہ

ویب ڈیسک:حکومت بسم اللہ خیبر پختونخواہ سے کرے، پیپلز پارٹی نے نیب میں زیر تفتیش وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ محمود خان کے استعفی کا مطالبہ کر دیا۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر رضا رباین نے کہا کہ سندھ کے وزیراعلیٰ کے استعفے کی بات کی جا رہی ہے، کہا جارہا ہے وزیراعلیٰ سندھ کا نام جے آئی ٹی میں آیا ہے، بلا تفریق احتساب کی باتوں کی طرح بلا تفریق معیار بھی ہونا چاہیے، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کو نیب نے انکوائری کی اسٹیج پر طلب کیا، خیبرپختوانخوا سے بسم اللہ کریں اور وزیراعلیٰ استعفیٰ دے کر مثال قائم کریں، دوہرا معیار رکھ کر بات کرنا مناسب نہیں۔

سابق چیئرمین سینیٹ نے کہاکہ منی بجٹ آرہا ہے، 155 ارب کے نئے ٹیکس لگ رہے ہیں لیکن پارلیمان کو کچھ نہیں بتایا گیا، آئی ایم ایف سے مذاکرات یا غیر ملکی دوروں پر پارلیمان کو اعتماد میں نہیں لیا گیا، امریکا افغانستان ڈائیلاگ پر بھی پارلیمان کو نہیں بتایا گیا، اگر پارلیمان کو اعتماد میں نہیں لیاجاسکتا تو پھر پارلیمان کا کردار کیا رہ جاتا ہے؟

رضا ربانی کا کہنا تھاکہ ایف آئی اے نے تجویز دی کہ اصغر خان پرانا کیس ہے شواہد نہیں ملے، کہا گیا پانچ افسران کے بارے میں علم نہیں ہو سکا، اس لیے اسے بند کر دیں، ایف آئی اے براہ راست وزیراعظم کے ماتحت ہے، اتنا بڑا اقدام کہ اصغر خان کیس کو بند کرنا چاہتے ہیں؟ کیسے ممکن ہے کہ کیس بندش کی سمری وزیراعظم کے پاس نہیں گئی ہوگی، اگر وزیراعظم کے پاس یہ سمری نہیں گئی تو یہ اور زیادہ خطرناک بات ہے، اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ موجودہ حکومت کی بیوروکریسی پر گرفت نہیں ہے۔

پی پی رہنما نے مزید کہا کہ ایف آئی اے نے اتنا بڑا قدم اٹھا لیا اور وزیر اعظم کو علم نہیں، اتنے بڑے اقدامات ہو رہے ہیں اور اس کا حکومت کو علم نہیں تو پھر حکومت چلا کون رہا ہے؟ جمہوری اقدار کا مذاق اڑانا ریاست کے لیے نہایت خطرناک رجحان ہے۔

متعلقہ خبریں