Daily Mashriq

ہاسٹل کا کھانا کھا کر 60 طالبات ہسپتال پہنچ گئیں

ہاسٹل کا کھانا کھا کر 60 طالبات ہسپتال پہنچ گئیں

ویہاڑی: یونیورسٹی آف ایجوکیشن، ویہاڑی کیمپس کی کم از کم 60 طالبات ہاسٹل میں ’مضر صحت‘ کھانا کھانے کے بعد ہسپتال پہنچ گئیں۔

ہاسٹل کے میس میں بدھ کی رات کو بڑی تعداد میں لڑکیوں نے روسٹ کی ہوئی چکن کھائی تھی، صبح 4 بجے کے قریب 60 لڑکیوں نے معدے میں تکلیف کی شکایت کی تھی اور ہوسٹل انتظامیہ نے 1122 ریسکیو کو بلایا جنہوں نے طالبات کو ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ویہاڑی منتقل کیا تھا۔

میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر فضل نے ڈان کو بتایا کہ لڑکیوں کو زہر خوری کے مسائل کا سامنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ زیادہ تر لڑکیاں علاج کے بعد ہسپتال سے واپس بھیجی جاچکی ہیں جبکہ ’چند اب بھی زیر علاج ہیں‘۔

ان کا کہنا تھا کہ 54 طالبات کو صبح سویرے ہسپتال لایا گیا تھا۔

یونیورسٹی کے نگراں پرنسپسل خلیل احمد نے بتایا کہ ’چند والدین اپنے بچوں کو نجی کلینک اور ہسپتال لے کر گئے ہیں‘۔

انہوں نے بتایا کہ ’ہاسٹل میں کل 102 لڑکیاں قیام پذیر تھیں‘۔

ان کا کہنا تھا کہ کھانے کے کنٹریکٹر نصیر احمد کا کنٹریکٹ منسوخ کردیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ فوڈ اتھارٹی نے کھانے اور پینے کے پانی کے نمونے حاصل کرلیے ہیں اور ان کا معائنہ کرنے کے لیے لیب بھیجا جا چکا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ انکوائری کے مکمل ہونے تک میس کو مکمل تر پر سیل کردیا گیا ہے۔

دانیوال پولیس کے اسٹیشن ہاؤس آفیسر ناصر تبسم کا کہنا تھا کہ لیب رپورٹ سامنے آنے کے بعد پیور فوڈ ایکٹ کے تحت کیس درج کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں