Daily Mashriq

مشرقیات

مشرقیات

کیوں اداس پھرتے ہو

اس موسم میں سردی کی شدت اتنی ہے کہ قلفیاں جم جانے کا محاورہ سچ مچ بن گیا ہے۔ بابائے مشرقیات کی عمر کے لوگ ویسے بھی جمائی ہوئی قلفی کے مترادف ہوں گے خواہ گرمی ہو یا سردی لیکن آج کل کے جوان بھی کچھ بناسپتی قسم کے جوان ہیں، بناسپتی کھا کھا کر بناسپتی جوانی ہی آنی ہے نا۔ اچھا ہے کہ ان کی جوانیاں بناسپتی ہیں ورنہ زمانہ ویسے بھی خراب ہے۔ یہ جو پی ٹی آئی نے مرغی چوزے اور انڈے دینے کی پالیسی اختیار کی ہے گوکہ وزیراعظم عمران خان نے آئندہ یہ بات نہ کرنے کا اعلان کر دیا ہے مگر اب میں تو کمبل کو چھوڑتا ہوں مگر کمبل مجھے نہیں چھوڑتا والا معاملہ ہے۔ پی ٹی آئی کے کھلاڑی اس وقت تک چھائے رہے جب تک مرغی انڈوں والی بات نہ ہوئی تھی اب بیچارے جہاں نظر آتے ہیں مرغی کی آواز نکالو تو خجالت کے مارے سر جھکا دیتے ہیں، جیسے لڑکی والوں کا سر بلاوجہ جھکا ہوتا ہے جو بیچارے لڑکی کو پال پوس کر رشتہ دیتے ہیں مگر سر جھکا کر، دلہن بھی سر جھکاتی ہے شرماتی ہے مگر یہ صرف دوچار دن کی بات ہوتی ہے اس کے بعد دلہن رضیہ سلطانہ بن جاتی ہے اور بیچارے گھر والے ڈاکو نظر آتے ہیں۔ کچھ دلہنیں ایک رات کی دلہن ہوتی ہیں اسی طرح کی ایک دلہن کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ شب بسری کے بعد صبح دم دلہا میاں ایک نوکرانی کو اپنی دلہن کے زیور چرائے رنگے ہاتھوں پکڑ کر اپنی دانست میں اس کی درگت بنا رہے ہوتے ہیں کہ لڑکے کی ماں شور سن کر اندر کمرے میںآتی ہے، بیٹے کو نوکرانی سے تکرار کرنے پر ٹوکتے ہوئے کہتی ہیں! کونسی نوکرانی؟ یہ تو تمہاری دلہن ہے یعنی رات گئی بات گئی دلہن بن گئی نوکرانی۔ جو رنگ وروپ دلہن ساتھ لیکر سج دھج کے حجلہ عروسی میں داخل ہوئی تھیں وہ تو سارا دھل کر سیوریج لائن میں جا چکا پھر تو دلہن ایک رات کی ہی ہوئی نا۔ اسی طرح ایک دلہن کے شوہر نامدار نے میک اپ کرنے والی یعنی بیوٹی پارلر کی مالکن کو آئی فون کا ایک خوبصورت تحفہ بھیجا۔ بیوٹی پارلر کی مالکن نے خوشی خوشی ڈبہ کھول کر دیکھا تو اندر سے 3310 کا موبائل سیٹ نکل آیا۔ ایک پرچی بھی ساتھ تھی جس پہ لکھا تھا کہ میری بھی وہی کیفیت ہے جو اس وقت آپ کا ہے۔ یعنی آپ نے جو آئی فون بھیجا تھا ڈبہ کھولنے پر یعنی میک اپ اُترنے پر وہ بھی آئی فون کے ڈبے میں سے 3310 ہی نکلی۔ ہمارے آج کل کے نوجوان کتنے بھی سیانے ہوں وہ 3310 کو شب زفاف سے قبل آئی فون سمجھنے کی غلطی کر رہے ہوتے ہیں۔ عقدہ کھلتا ہے تو عقد ہو چکا ہوتا ہے، تب کچھ نہیں ہو سکتا سوائے گزارہ کے اور وہ بھی عمر بھر کیلئے۔سوشل میڈیا سے ایک جملہ مستعار ہے۔ایک منٹ کی خاموشی ان لوگوں کیلئے جو اس سال بھر سردیوں میں کنوارے رہ گئے۔

متعلقہ خبریں