لاہور میں طوفانی بارشو٘ں کے باعث مختلف حادثات میں6افراد جاں بحق

لاہور میں طوفانی بارشو٘ں کے باعث مختلف حادثات میں6افراد جاں بحق

ویب ڈیسک:لاہور شہر میں کئی گھنٹوں تک جاری رہنے والی بارش نے تباہی مچادی  مختلف حادثات میں 6 افراد جاں بحق ،متعدد زخمی ہوگئے۔

لاہور سمیت پنجاب کے مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ موسلادھار بارش کا۔ کئی گھنٹوں پر محیط بارش نے تباہی مچادی ہے، شہر میں شدید بارشوں کے باعث سڑکیں اور انڈر پاس تالاب کا منظر پیش کرنے لگے۔ دوسری جانب شہر کے مختلف علاقوں میں کرنٹ لگنے اور چھتیں گرنے کے واقعات میں 6 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے۔

لکشمی چوک بھی معمول کے مطابق ندی کی صورت اختیار کر گیا جبکہ کئی اہم شاہراہیں بھی ڈوب گئیں۔ موسلا دھار بارش کا پانی گھروں میں داخل ہو گیا۔ جناح ہسپتال اور دیگر ہسپتالوں کی ایمرجنسی اور وارڈز بھی محفوظ نہ رہے۔

بارش سے ٹرین کا پہیہ بھی رُک گیا جس سے لاہور ریلوے سٹیشن پر مسافر خوار ہو گئے۔ پروازوں کا شیڈول متاثر ہونے سے درجنوں فلائٹس تاخیر کا شکار ہو گئیں۔ لاہور ہائیکورٹ میں بارش کا پانی جمع ہونے سے وکلا اور سائلین کو شدید مشکلات کا سامناکرنا پڑا۔

طوفانی بارش سے شہر میں بجلی کا بریک ڈاؤن ہو گیا اور 300 سے زائد فیڈر ٹرپ کر گئے۔شہر میں 300 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی جس سے سڑکیں اور گلیاں تالاب کا منظر پیش کرنے لگیں۔ 1980ء میں لاہور میں 200 ملی لیٹر تیز بارش ریکارڈ کی گئی تھی۔

مسلسل بارش کی وجہ سے بارش کا پانی گھروں، دکانوں، ہسپتالوں، تعلیمی اداروں اور عمارتوں کے تہہ خانوں میں داخل ہو گیا جس کے نتیجے میں سابقہ حکمرانوں کے لاہور کو پریس بنانے کے تمام تر دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے۔

موسلا دھار بارش سے سڑکوں کو بارش کے پانی کی بندش کے باعث سرکاری اور نجی دفاتر میں ملازمین کی حاضری نہ ہونے کے برابر تھی۔

دوسری جانب محکمہ موسمیات نے پیشگوئی کی ہے کہ آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران لاہور سمیت وسطی پنجاب اور بالائی پنجاب کے مختلف علاقوں میں مزید بارش کا امکان ہے۔

متعلقہ خبریں