Daily Mashriq

اسلامی تعاون تنظیم کی مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشتگردی کی شدید مذمت

اسلامی تعاون تنظیم کی مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشتگردی کی شدید مذمت

اسلامی تعاون تنظیم نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشتگردی کی حالیہ لہر کی شدید الفاظ میں مذمت اور مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور مظالم پر گہری تشویش ظاہر کی ہے۔

ابوظہبی میں تنظیم کی وزرائے خارجہ کونسل کے چھیالیسیویں اجلاس میں منظور کی گئی قرارداد میں اس  کے رکن ملکوں نے اس موقف کااعادہ کیا کہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان بنیادی تنازعہ ہے اور جنوبی ایشیا میں قیام امن کا خواب شرمندہ تعبیر کرنے کیلئے اسکا حل ناگزیر ہے۔

قرار داد میں کشمیریوں کے منصفانہ نصب العین کے حصول کےلئے او آئی سی کی طرف سے ان کی غیر متزلزل حمایت کا اعادہ کیاگیا اور عالمی برادری کو باور کرایا گیا کہ وہ اس مسئلے کے بارے میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں پر عملدرآمد یقینی بنانے کےلئے اپنی ذمہ داری پوری کرے۔

خطے کی موجودہ تشویشناک صورتحال کے تناظر میں اسلامی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں نے پاکستان کی طرف سے پیش کی گئی ایک نئی قراردادکی بھی منظوری دی جس میں بھارت کی طرف سے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی پر شدید تشویش ظاہر کی گئی۔

 قرار داد میں کہا گیا کہ پاکستان اپنے دفاع کا پورا حق رکھتا ہے اور بھارت پر زور دیا گیا کہ وہ دھمکی آمیز رویے یا طاقت کے استعمال سے باز رہے۔

 قرار داد میں وزیراعظم عمران خان کی طرف سے بھارت کو مذاکرات کی دوبارہ پیشکش اور جذبہ خیرسگالی کے تحت بھارتی پائلٹ کی رہائی کا خیرمقدم کیا گیا۔

 قرار داد میں ضبط و تحمل کا مظاہرہ کرنے، کشیدگی کے خاتمے اور تصفیہ طلب تنازعات پرامن طریقے سے حل کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا۔

اسلامی تعاون تنظیم نے پاکستان کی جانب سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں دنیا   میں تخفیف اسلحہ اور اس کے عدم پھیلاو سے متعلق پیش کی گئی دو قرار دادیں بھی منظور کیں۔

تنظیم نے ایک اور اہم پیشرفت میں انسانی حقوق کے حوالے سے پاکستان کی اقدار اور پالیسیوں کی تشکیل میں اس کے تعمیری کردار کی تعریف کرتے ہوئے اسے ایشیا کے لئے اپنے خو د مختار مستقل انسانی حقوق کمیشن کا رکن منتخب کرلیا ۔

اسلامی تعاون تنظیم کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کے عوام اور علاقائی امن کے لئے تنازعہ کشمیر کے حل کی حمایت تنظیم کے بانی رکن کے طورپر پاکستان کے اہم کردار کا اعتراف  ہے۔

متعلقہ خبریں