13ویں صدر مملکت کی انتخابی مہم اختتامی مراحل میں داخل

03 ستمبر 2018 (16:46)

ویب ڈیسک:صدارتی انتخابات کیلئے حکومتی اور اپوزیشن کیجانب سے نامزد امیدواروں نے جیت کیلئے سرگرمیاں تیز کر دیں۔

صدارتی انتخاب کیلئے ایک دن سے بھی کم وقت باقی رہ گیا، اس حوالے سے جہاں ایک طرف صدارتی امیدواروں کے دیگر سیاسی رہنماوں سے رابطوں میں بھی تیزی آگئی ہے وہیں اپوزیشن جماعتیں مشترکہ امیدوار کیلئے بھی اپنی آخری کوششوں میں مصروف ہے۔

صدارتی انتخاب کیلئے نمبر گیم پورے کرنے کیلئے تحریک انصاف کے نامزدامیدوار عارف علوی نے جہانگیر ترین اور دیگر پارٹی قائدین سمیت آج اسلام آباد میں بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سے تفصیلی ملاقات کی۔

تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین جو کہ خاص طور پرعارف علوی صدارتی مہم کیلئے اپنا بیرون ملک کا دورہ مختصر کر کے پاکستان واپس آئے تھے ایک بار پھر بی این پی کے ساتھ معاملات طے کرنے میں کامیاب رہے اور بی این پی کیجانب سے سرداراختر مینگل نے صدارتی انتخاب میں عارف علوی کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے جہانگیر ترین سمیت مفاہمتی یاداشت پر دستخط بھی کیے۔

دوسری طرف اپوزیشن جماعتوں میں صدارتی امیدوار کے حوالے سے ڈیڈ لاک برقرار ہے تاہم دونوں طرف سے مشترکہ صدارتی امیدوار پر اتفاق کی کوششیں بھی جاری ہیں اور اس سلسلے میں متحدہ اپوزیشن کے نامزد صدارتی امیدوار مولانا فضل الرحمٰن کے درمیان رابطہ بھی قائم ہے، آج شام آصف زرداری اوربلاول بھٹو زرداری کی زیر صدارت پیپلز پارٹی کا اہم اجلاس بھی متوقع ہے جس میں اپوزیشن کیجانب سے مشترکہ صدارتی امیدوار سے متعلق اہم فیصلے کی توقع کی جا رہی ہے۔

مزیدخبریں