منظور پشتین کو عالمی میڈیا استعمال کر رہا ہے،ڈی جی آئی ایس پی آر

منظور پشتین کو عالمی میڈیا استعمال کر رہا ہے،ڈی جی آئی ایس پی آر

ویب ڈیسک:بھارت نے 13 برسوں میں 2 ہزار سے زائد بار جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی لیکن پاکستان نے ہمیشہ ذمہ داری کا مظاہرہ کیا، ڈی جی آئی ایس پی آر۔ 

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا راولپنڈی میں پریس کانفرنس کے دوران کہنا تھا کہ بھارت کیجانب سے  2018 میں 1 ہزار 77 مرتبہ جنگ بندی  معاہدے کی خلاف ورزیاں کیں اور 48 پاکستانیوں کو شہید کیا، بھارت کی جانب سے شہری آبادی کو نشانہ بنایا جاتا ہے لیکن ہماری امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے۔

میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ ہم نے سیکھا ہے کہ سب سے پہلے پاکستان ہے، امن لانا ہے تو فوج اور حکومت پر اعتماد رکھنا ہوگا، افغانستان کے وفد نے پاکستان کا دورہ کیا اور ان کے ساتھ بہت مثبت بات چیت ہوئی، آرمی چیف سے افغان وفد کی ملاقات بھی مثبت رہی، فاٹا کا خیبرپختون خوا میں انضمام تاریخی کامیابی ہے، اگرچہ 100 فیصد اتفاق رائے نہیں تھا اور کچھ عمائدین انضمام نہیں چاہتے تھے، لیکن فاٹا اب خیبرپختونخوا کا حصہ ہے جسے ترقی اور بہتری کی طرف لے کر جانا ہے۔

 میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ غیر ملکی میڈیا پی ٹی ایم کے جلسے کو کیوں براہ راست نشر کررہا ہے، آرمی چیف کی سخت ہدایت تھی کہ پی ٹی ایم کے جلسے کو طاقت سے منتشر نہیں کرنا، لاہور جلسے میں آرمی چیف نے پولیس کو پی ٹی ایم کارکنوں کی پکڑ دھکڑ سے منع کیا، تاحال پی ٹی ایم کے خلاف کوئی کریک ڈاؤن نہیں کیا گیا، لیکن اب ہمارے پاس پی ٹی ایم کے خلاف بہت سارے ثبوت ہیں، یہ لوگ استعمال ہورہے ہیں، وانا میں پی ٹی ایم کارکن فوج مخالف نعرے لگا رہے تھے، امن کمیٹی نے منع کیا تو دونوں طرف سے فائرنگ کا تبادلہ ہوگیا جس میں ہلاکتیں ہوئیں، لیکن سوشل میڈیا پر فوج کے خلاف پروپگینڈا کیا جارہا ہے، آپ ریاست کو طاقت کے استعمال پر مجبور کررہے ہیں، ہمارے خلاف الزام لگانے اور نعرے لگانے سے فوج کو کوئی فرق نہیں پڑتا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ ہزارہ  کمیونٹی کے 100 سے زائد افراد کے قتل میں ملوث سلمان بادینی کو ہلاک کیا گیا، اس پر ہزارہ کمیونٹی کا بہت اچھا رد عمل سامنے آیا، سلمان بادینی کا نیٹ ورک توڑنے سے بلوچستان میں امن کی صورتحال بہتر ہونے کی امید ہے۔

میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ ایران کے ساتھ سرحد پر حالات بہتری کی طرف جا رہے ہیں، آرمی چیف کے دورہ ایران اور آئی جی ایف سی کے رابطوں کا بہتر نتیجہ نکل رہا ہے۔

متعلقہ خبریں