Daily Mashriq

 بالاکوٹ میں دخل اندازی پر سوال کرنے پر غداری کا الزام حیران کن، محبوبہ مفتی

بالاکوٹ میں دخل اندازی پر سوال کرنے پر غداری کا الزام حیران کن، محبوبہ مفتی

مقبوضہ جموں وکشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے بھارت کی جانب سے بالاکوٹ میں پاکستان کی حدود میں دخل اندازی پر سوالات اٹھانے والے افراد پر غداری کے الزامات عائد کرنے کو حیران کن قرار دے دیا۔

محبوبہ مفتی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر میں اپنے بیان میں کہا کہ ‘بالاکوٹ میں کارروائی کی سچائی پر سوالات اٹھانے والون کو غدار قرار دینا حیران کن ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘اپوزیشن کو بے روزگاری، جی ایس ٹی، کرنسی کی بے قدری اور کسانوں کے مسائل پر الیکشن کے پیش نظر پردہ ڈالنے کے لیے فضائی کارروائی جیسی چال کا شکار نہیں ہونا چاہیے’۔

محبوبہ مفتی نے اپنی دوسری ٹویٹ میں کہا کہ ‘اس وقت جب جنگی دیوانہ پن اور جنون محب الوطنی کی آڑ میں عروج پر ہے اور ایسے میں بالاکوٹ کی کارروائی کے ذریعے سیاسی ہل چل کو کم کرنا صرف بی جے پی کو فائدہ دے گی’۔

انہوں نے کہا کہ ‘اس میں کوئی حیرت نہیں کہ رافیل معاہدہ، بے روزگای، کمزور معاشی بڑھوتری عدم توجہ کے باعث دھندلا گئی ہے’۔

بھارتی زیر تسلط جموں کشمیر کی سابق وزیراعلیٰ نے کہا کہ بطور بھارتی شہری ‘ہر کسی کو بالاکوٹ آپریشن کی سچائی پر سوال کرنے کا حق ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارتی حکومت اس آپریشن کی تفصیلات کے حوالے سے ابہام میں ہے اس لیے سوالات اٹھانا بالکل فطری بات ہے۔

محبوبہ مفتی نے کہا کہ ‘یہ بات دشمن کو کیسے مدد کرسکتی ہے’ کیونکہ یہ بھارتی حکومت کے مفاد میں ہے اور ان کی نظریں اس معاملے پر سیاسی فائدہ حاصل کرنے پر مرکوز ہیں۔

خیال رہے ان کا بیان بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی جانب سے پٹنہ میں نیشنل ڈیموکریٹک الائنس (این ڈی اے) کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے پلوامہ واقعے کے جواب میں بالاکوٹ پر کارروائی کے ثبوت مانگنے پر اپوزیشن جماعتوں پر سخت تنقید کے بعد آیا ہے۔

بھارت کے سیکریٹری خارجہ وجے گوخلے نے دعویٰ کیا تھا کہ بالاکوٹ میں کارروائی میں جیش محمد سے تعلق رکھنے والے دہشت گردوں کی ایک بڑی تعداد کو مارا گیا ہے۔

بھارت کے ایک اور سینئر عہدیدار نے صحافیوں کو بتایا تھا کہ تقریباً 300 دہشت گردوں کو مارا گیا لیکن نئی دہلی نے کسی قسم کے ثبوت فراہم کرنے سے انکار کردیا تھا۔

بھارتی ائروائس مارشل آر جی کے کپور نے 28 فروری کو پریس بریفنگ میں کہا تھا کہ ہلاکتوں کے حوالے سے کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا اور بھارتی فضائیہ نے جو کچھ تباہ کیا وہ ہدف تھا۔

واضح رہے کہ پاکستان کی جناب سے بالاکوٹ میں کسی قسم کی بم باری کے دعووں کو مسترد کرتے ہوئے میڈیا کو تمام علاقے کا دورہ کرنے کی دعوت دی تھی تاہم جہاں پر بھارتی طیاروں نے جاتے ہوئے پے لوڈ گرایا تھا جس سے کئی درختوں کو نقصان پہنچا تھا۔

متعلقہ خبریں