Daily Mashriq

مریخ پرزندگی کھوجنےوالی خلائی گاڑی جولائی میں لانچ ہوگی

مریخ پرزندگی کھوجنےوالی خلائی گاڑی جولائی میں لانچ ہوگی

امریکہ کی نیشنل ایرونوٹکس اینڈ اسپیس ایڈمنسٹریشن( ناسا) نے مریخ کے لئے ایک نئی خلائی گاڑی مارس 2020 رواں سال جولائی میں لانچ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ یہ گاڑی دیگر تحقیق کا علاوہ سیارے پر ممکنہ زندگی کا کھوج بھی لگائے گی۔

یہ نئی گاڑی 2012 میں مریخ پر اتاری جانے والی کیوروسٹی کار سے بظاہر مماثلت رکھتی ہے تاہم دونوں مشینیں جدا اہمیت کی حامل ہیں۔

ایک غیر ملکی ویب سائٹ کے مطابق کیوروسٹی نے اپنی154 کلومیٹرچوڑی لینڈنگ سائٹ ‘گیل کریٹر’ پر یہ جائزہ لینے کی کوشش کی تھی کہ آیا وہ جگہ زمانہ قدیم میں رہائش کے قابل تھی۔ اس نے بہت جلد ہی یہ پتہ لگالیا تھا کہ وہ مقام ممکنہ طور پر رہائش کے قابل تھا کیوں کہ وہاں ماضی میں جھیل اور ندی کا نظام موجود تھا۔ اب وہ گاڑی اس گزرے ہوئے ہوجانے والے ماحول کے بارے میں مزید باریک بینی سے تحقیق کر رہی ہے۔

مارس 2020 کار اپنی جیزیرو کریٹر نامی اپنی سائٹ پر فروری 2021 میں پہلے والی گاڑی کی طرح کام کا شروع کرے گی تاہم وہ وہاں کے پتھروں اور مٹی میں زمانہ قدیم میں ممکنہ طور پر پائے جانے والی زندگی کے آثار بھی تلاش کرنے کی کوشش کرے گی۔

 کیوروسٹی اور مارس 2020 کے دو روبوٹک بازوئوں کی پہنچ ایک جتنی یعنی 7 فٹ ہے لیکن یہ نئی گاڑی پچھلی کے مقابلے میں زیادہ بڑے اوزار سے لیس ہے لہذا زیادہ گہری کھدائی کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ یہ کھدائی کے دوران مریخ کے پتھروں کو پیسنے یا ریزہ ریزہ کرنے کے بجائے ان کے اہم حصوں کو اصلی حالت میں نکالنے کی بھی صلاحیت رکھتی ہے۔

کیوروسٹی میں 17 کلر اور بلیک اینڈ وہائٹ کیمرے نصب ہیں جبکہ مارس 2020 میں ان کی تعداد 23 ہوگی جن میں سے بیشتر رنگین تصاویر لے سکیں گے۔ اس کے علاوہ اس گاڑی میں زوم اور ہائی ڈیفینیشن ویڈیو کیمرا بھی ہوگا جو اسے کیوروسٹی سے ممتاز بناتا ہے۔

کیوروسٹی کے بر خلاف اس کے پاس دو مائکروفونز بھی ہوں گے جس سے نہ صرف اس گاڑی کی مریخ پر اترتے ہوئے آواز اور اس سیارے پرہوا کی آوازیں بھی سنی جاسکیں گی۔

متعلقہ خبریں