Daily Mashriq

 ورلڈکپ: بھارت کے خلاف جنوبی افریقہ کے دونوں اوپنرز آؤٹ

ورلڈکپ: بھارت کے خلاف جنوبی افریقہ کے دونوں اوپنرز آؤٹ

ہیمپشائر: ورلڈکپ میں بھارت کے خلاف جنوبی افریقہ کے دونوں اوپنرز محض 24 رنز پر پویلین لوٹ گئے، ہاشم آملہ 6 اور کوئنٹن ڈی کاک11 رنز بناکر جسپرت بمرا کا شکار بنے۔

بھارتی کرکٹ ٹیم نے ورلڈکپ 2019 میں آج جنوبی افریقہ کے خلاف میچ سے اپنے سفر کا آغاز کیا ہے۔

جنوبی افریقی ٹیم ورلڈکپ میں اپنا تیسرا میچ کھیل رہی ہے، اس سے قبل اسے بنگلہ دیش اور انگلینڈ کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

مسلسل دو شکستوں کے بعد جنوبی افریقہ کے لیے یہ میچ اہمیت اختیار کر گیا ہے۔

جنوبی افریقی کپتان فاف ڈیوپلیسی نے ٹاس کے بعد گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ٹیم میں ہاشم آملہ کو شامل کیا گیا ہے جبکہ عمران طاہر کا ساتھ دینے کے لیے اسپنر تبریز شمسی کو بھی اسکواڈ کا حصہ بنایا گیا ہے۔

انہوں نے فتح کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بھارت سے ہمارا مقابلہ ہمیشہ ہی سخت ہوتا ہے۔

بھارتی کپتان ویرات کوہلی نے ٹاس ہارنے پر کہا کہ ہم گزشتہ ایک ہفتے سے ٹورنامنٹ کے میچز دیکھ رہے ہیں اور ہمیں اچھی طرح اندازہ ہوگیا ہے کہ کس طرح کھیلنا ہے۔

انہوں نے اسٹیڈیم میں موجود شائقین کی جانب دیکھتے ہوئے کہا کہ لوگوں میں بہت جوش ہے اور یہ بھارت کو جیتتے ہوئے دیکھنا چاہتے ہیں۔

ویرات کوہلی کا کہنا تھا کہ ہم نے وکٹ کو دیکھتے ہوئے دو اسپنرز کو اسکواڈ میں شامل کیا ہے۔

بھارتی اسکواڈ: روہت شرما، شیکھر دھون، ویرات کوہلی، کے ایل راہول، کیدار یادیو، ایم ایس دھونی، ہردک پانڈیا، بھونیشور کیمار، کلدیپ یادیو، یوزویندرا چاہل اور جسپرت بمرا

جنوبی افریقی اسکواڈ: کوئنٹئن ڈی کاک، ہاشم آملہ، فاف ڈیوپلیسی، ریسی وین ڈیر ڈوسین، ڈیوڈ ملر، جے پی ڈومینی، آندلی پھیہلوکوایو، کرس مورس، کگیسو ربادا، تبریز شمسی اور عمران طاہر

گزشتہ روز جنوبی افریقی کپتان فاف ڈیوپلیسی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے اپنے اہم باؤلر ڈیل اسٹین کی انجری کی وجہ انڈین پریمیئر لیگ کو قرار دیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ انڈین پریمیئر لیگ سے قبل ڈیل اسٹین ناقابل یقین حد تک بہترین باؤلنگ کر رہے تھے اور اپنی بہترین فارم میں تھے، بدقسمتی سے وہ آئی پی ایل کے دو میچوں میں انجری کا شکار ہوگئے۔

انہوں نے تجربہ کار فاسٹ باؤلر کے لیگ میں کھیلنے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر ڈیل اسٹین کو آئی پی ایل کے لیے منتخب نہیں کیا گیا ہوتا تو کیا پتہ کہ وہ اب ٹھیک ہوتے، ہم ان چیزوں پر قابو نہیں پاسکتے۔

متعلقہ خبریں