Daily Mashriq

کراچی میں میچز ؛ اسپائیڈر کیمرے کی سہولت میسر نہیں ہوگی

کراچی میں میچز ؛ اسپائیڈر کیمرے کی سہولت میسر نہیں ہوگی

لاہور: ذرائع کے مطابق بیک وقت 2اسٹیڈیمز میں تنصیبات ممکن نہ ہونے کی وجہ سے سارا میلہ ایک ہی جگہ سجانے کا فیصلہ کرنا پڑا، کراچی میں بھی اسپائیڈر کیمرے کی سہولت میسر آنے کا امکان نہیں۔ تفصیلات کے مطابق پی ایس ایل فور کے پہلے مرحلے میں دبئی انٹرنیشنل کرکٹ اسٹیڈیم پر7میچز کھیلے گئے ۔

ایسے میں نشریاتی حقوق رکھنے والی بھارتی کمپنی نے اپنی حکومت کے منفی پروپیگنڈے کا بھرپور ساتھ دیتے ہوئے ایونٹ کے باقی میچز براہ راست دکھانے سے انکار کردیا،اس وقت شارجہ میں مقابلے شروع ہونے میں2دن باقی تھے، پی سی بی نے اس وقفے میں نئی کمپنی کی خدمات حاصل کرلیں اور مقابلے دنیا بھر میں دیکھے گئے،دوبارہ دبئی میں میچز کے بعد اب ابوظبی میں بھی براہ راست نشریات کا سلسلہ جاری ہے،اتوار کو پی سی بی کی جانب سے لاہور میں شیڈول تینوں میچز بھی کراچی منتقل کرتے ہوئے وجہ بتائی گئی کہ پروازیں تاخیر سے کھلنے کی وجہ سے قذافی اسٹیڈیم میں مقابلوں کیلیے نشریاتی ادارے کی تیاریوں کے ساتھ ٹیموں اور آفیشلز کو مسائل درپیش آتے، اس لیے تمام 8 میچ کراچی میں کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ایک بڑی وجہ یہ بھی ہے کہ بھارتی کمپنی کے انکار پر نشریاتی معاملات سنبھالنے والے ادارے کے پاس اتنے وسائل نہیں تھے کہ وہ بیک وقت2اسٹیڈیمز میں اپنی تنصیبات کا اہتمام کرسکتا،اس مسئلے کا پی سی بی کو اندازہ بھی تھا، 28فروری کو دبئی میں ہونے والی پریس کانفرنس میں چیئرمین پی سی بی احسان مانی نے لاہور اور کراچی میں میچز شیڈول کے مطابق کرانے کا اعلان کیا تواس وقت بھی براڈ کاسٹنگ سے متعلق سوال پر انھوں نے کہا تھا کہ مسائل ہوسکتے ہیں لیکن ان کا حل تلاش کرلیا جائے گا،ذرائع کے مطابق تنصیبات کیلیے وسائل اور وقت دونوں درکار ہوتے ہیں، دونوں کی کمی کے پیش نظر تمام میچز کراچی میں اور وہ بھی7کے بجائے9مارچ سے شروع کرانے کا فیصلہ کیا گیا، یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ نیشنل اسٹیڈیم میں میچز کیلیے اسپائیڈر کیمرہ ٹیم کے بھی پاکستان آنے کا امکان نہیں۔

متعلقہ خبریں