Daily Mashriq

دودھ کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ

دودھ کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ

پٹرول اور روٹی کی قیمتوں میں اضافے کے بعد پشاور کے رہائشیوں کیلئے دودھ بھی 10روپے فی لیٹر مہنگا کردیا گیا ہے جس کے بعد شہر کے مختلف علاقوں میں دودھ کی نئی قیمتیں 90سے 120روپے تک پہنچ گئی ہیں۔تاہم شیر فروشوں نے ضلعی انتظامیہ کے اعلامیہ کے بغیر ہی دودھ کی قیمت بڑھا دی ہے اسی طرح دودھ کی قیمت بڑھنے کے ساتھ ہی دہی کی قیمت بھی بڑھ گئی ہے اور دہی فی کلو 130روپے وصول کیا جائیگا۔ نانبائیوں کے بعد دودھ فروشوں نے بھی انتظامیہ کو خاطر میں لائے بغیر قیمتوں میں اضافہ کرکے حکومتی عملداری کا جو مذاق اڑایا ہے اگر یہ سلسلہ جاری رہا اور مہنگائی میں اضافے کی یہی رفتار رہی تو عوام کی اکثریت کے لئے جسم و جان کا رشتہ برقرار رکھنا نا ممکن ہوگا۔ روٹی کے بعد دودھ عام استعمال کی خوراک ہے جس کی قیمت بڑھنے سے عوام کی روز مرہ زندگی پر سخت اثرات مرتب ہوں گے۔ دودھ کا ناخالص ہونا بھی اپنی جگہ مسئلہ ہے یوں عوام کو ناقص دودھ اور دہی مہنگے داموں میسر ہوگا جس کا صوبائی حکومت کو فوری نوٹس لینا چاہئے۔ ضلعی انتظامیہ کو فوری طور پر دودھ کی مناسب قیمت مقرر کرکے اس کی مکمل پابندی کرانے کو یقینی بنانا چاہئے۔

متعلقہ خبریں