Daily Mashriq


سینٹراعظم سواتی نے وفاقی وزارت سے مستعفی، مقدمہ بغیر عہدے کے لڑنے کا اعلان

سینٹراعظم سواتی نے وفاقی وزارت سے مستعفی، مقدمہ بغیر عہدے کے لڑنے کا اعلان

ویب ڈیسک: جب تک کیس کا فیصلہ نہیں ہوجاتا عہدے پر براجمان نہیں رہ سکتا،سینٹر اعظم سواتی۔

تحریک انصاف کے رہنما اور وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی اعظم سواتی نے عہدے سے استعفیٰ دیدیا ہے۔ اعظم سواتی کا کہنا ہے کہ میں نے استعفیٰ وزیراعظم عمران خان کو بھیج دیا ہے، وزیراعظم کو ملاقات میں بتایا کہ ان حالات میں کام نہیں کرسکتا، اخلاقی برتری کے لیے استعفیٰ دیا ہے اور وزیراعظم نے بات مان کر استعفیٰ قبول کرلیا ہے جب کہ اب کسی قلمدان کے بغیر اپنا کیس لڑوں گا۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں سینئر صحافیوں کو انٹرویو میں وزیر اعظم عمران خان نے کہا تھا کہ میرا کوئی وزیر کوئی غلط کام کرتا ہے تو میں چاہتا ہوں کہ وہ ظاہر ہو، ساتھ ہی انہوں نے یہ عندیہ دیا تھا کہ کارکردگی پر پورا نہ اترنے والے وزیروں کو تبدیل کرسکتے ہیں۔

دوسری جانب ترجمان وزیرا عظم کے مطابق اعظم سواتی نے اپنے خلاف جاری کیس میں فیصلہ آنے تک وزارت رکھنے سے معذرت کی۔

یاد رہے کہ اعظم سواتی کے خلاف انسپکٹر جنرل (آئی جی) اسلام آباد کے تبادلے سے متعلق سپریم کورٹ میں کیس زیر سماعت ہے۔

پس منظر

اکتوبر میں اسلام آباد میں وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اعظم سواتی کے فارم ہاؤس میں داخل ہونے اور ان کے گارڈز کو تشدد کا نشانہ بنانے کے الزام میں 2 خواتین سمیت 5 افراد کو گرفتار کرلیا گیا تھا، جس کے بعد یہ معاملہ سامنے آیا تھا۔

اسی حوالے سے یہ خبر سامنے آئی تھی کہ سینٹراعظم خان سواتی کا فون نہ اٹھانے پر آئی جی اسلام آباد کا مبینہ طور پر تبادلہ کیا گیا، جس پر سپریم کورٹ نے 29 اکتوبر کو نوٹس لیتے ہوئے آئی جی کے تبادلے کا نوٹی فکیشن معطل کردیا تھا۔

معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے تھے کہ سنا ہے کہ کسی وزیر کے کہنے پر آئی جی اسلام آباد کو ہٹایا گیا۔'

انہوں نے کہا تھا کہ قانون کی حکمرانی قائم رہے گی، ہم کسی بھی وجہ سے اداروں کو کمزور نہیں ہونے دیں گے۔

بعد ازاں سپریم کورٹ نے سماعت کے دوران معاملے کی باقاعدہ تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی بنانے کا حکم دیا تھا۔

متعلقہ خبریں