Daily Mashriq

پاک افغان راہداریاں اور فروغ تجارت

پاک افغان راہداریاں اور فروغ تجارت

پاک افغان رابطوں اور تجارت کوفروغ دینے کیلئے اگست میں طورخم،مہمند اور چترال کے پاک افغان گیٹ کھولنے کافیصلہ کرلیاگیا،سکیورٹی فراہم کرنے کیلئے پاک افغان سرحد پر مزید نفری تعینات کی جائے گی جبکہ گاڑیوں کو سہولیات کی فراہمی کیلئے کسٹم کابھی مزید عملہ تعینات کیا جائے گا۔ وزیراعظم کی ہدایت پرحکومت نے 7اگست سے ضلع مہمنداور چترال سے ملحقہ سرحد پرپاک افغان گیٹ کوکھولنے کا فیصلہ کیا ہے، اس حوالے سے ایف بی آر حکام کو آگاہ کر دیا گیا ایف بی آر ذرائع کے مطابق طورخم گیٹ وفاقی حکومت کی ہدایات کی روشنی میں 24گھنٹے کھلا رہے گا۔پاکستان اور پڑوسی ملک افغانستان کے درمیان رابطوں کے فروغ کیلئے طور خم گیٹ کو چوبیس گھنٹے کھلا رکھنے کے ساتھ ساتھ مہمند اور چترال کے سرحدی گیٹ بھی کھولے جائیں گے۔ غلام خان کی راہداری پہلے ہی کھول دی گئی ہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان اچھی ہمسائیگی اور بہتر تعلقات کے لئے دونوں ملکوں کے درمیان آمد و رفت کی سہولتوں کو جتنا آسان اور بروقت قابل رسائی بنایا جائے اتنا ہی بہتر ہوگا اور دونوں ممالک کے عوام ایک دوسرے کے قریب آجائیں گے ۔ جہاں تک ان راہداریوں سے تجارت اور کاروبارکے فروغ کاسوال ہے یہ دونوں ملکوں کے مفاد میں ہے کہ وہ باہم تجارت کو اتنا فروغ دیں کہ دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی حجم ریکارڈ ساز بن جائے۔ دونوں ملکوں کے درمیان کاروبار کے جو وسیع مواقع موجود ہیں ان کا اعادہ کرنے کی ضرورت نہیں۔

گھوسٹ ملازمین کے خلاف احسن کارروائی

ضلع خیبر میں محکمہ تعلیم کے گیارہ سو بائیس گھوسٹ ملازمین کو تحقیقات کے بعد فارغ اور طویل غیر حاضری پر ملازمین سے ایک کروڑ روپے کی ریکوری متعلقہ ضلع کے انتظامی سربراہ اور محکمہ تعلیم کے افسران کی حسن کارکردگی اور ذمہ داری کا مظہر ہے جو دیگر اضلاع کے مختلف محکموں کے حکام کے لئے قابل تقلید مثال ہے۔ ضم شدہ اضلاع کے ہر محکمے اور سابق فاٹا سیکرٹریٹ میں اس قسم کے سینکڑوں افراد کا سراغ لگانے کی اب بھی گنجائش موجود ہے۔ جامع اور تفصیلی تحقیقات کی جائیں تو حرام کی تنخواہ لینے والے مزید سینکڑوں افراد کا سراغ ممکن ہوگا جن کے خلاف تحقیقات اور برطرفی سے روزگار کے متلاشی بہت سے نوجوانوں کو کھپانے کی راہ ہموار ہوگی۔

متعلقہ خبریں