مشال قتل کیس کا فیصلہ سنا دیا گیا1مجرم کو سزائے موت،5کوعمر قید

مشال قتل کیس کا فیصلہ سنا دیا گیا1مجرم کو سزائے موت،5کوعمر قید

ویب ڈیسک:انسداد دہشتگردی کی عدالت میں مشال خان قتل کیس میں 1مجرم کو سزائے موت جبکہ 5کو عمر قید کی سزا سنا دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق انسداددہشتگردی کی عدالت نے مشال خان قتل کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے  1شخص کو سزائے موت اور 5مجرمان کو 25،25سال قید کی سزاسنادی،جبکہ 26 ملزمان کو شک کی بنیاد پر بری کر دیا گیا۔ 

13 اپریل 2017 کو عبد الولی خان یونیورسٹی مردان میں 23 سالہ طالب علم مشال خان کو مشتعل ہجوم نے توہین مذہب کا الزام لگا کر قتل کر دیا تھا۔مشال کے والد محمد اقبال کی درخواست پر مقدمہ انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت ایبٹ آباد منتقل کیا گیا۔ ستمبر 2017 سے جنوری 2018 تک کیس کی 25 سماعتیں ہوئیں، جن میں 68 گواہ پیش ہوئے۔ عدالت نے گواہان کے بیانات قلمبند کرنے کے بعد 30 جنوری کو مقدمے کا فیصلہ محفوظ کیا تھا۔واضح رہے کہ مشال خان کے قتل کا مقدمہ 61 افراد کے خلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت درج ہوا اور 58 ملزمان گرفتار ہوئے جب کہ تین ملزم عارف خان، اسد اور صابر تاحال مفرور ہیں۔انسداد دہشتگردی کی عدالت نے 1مجرم کو سزائے موت اور 5کو 25،25سال قید کی سزاسنادی۔

متعلقہ خبریں