Daily Mashriq


’شہباز شریف نے پی اے سی کی چیئرمین شپ سے استعفیٰ نہیں دیا‘

’شہباز شریف نے پی اے سی کی چیئرمین شپ سے استعفیٰ نہیں دیا‘

اسلام آباد: اپوزیشن اراکین نے پیٹرول کی قیمتوں میں 9 روپے اضافے پر قومی اسمبلی اور سینیٹ کے اجلاس سے بائیکاٹ کیا۔

قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران ہنگامہ آرائی رہی اور اپوزیشن جماعتوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے پلے کارڈز اٹھائے اور نعرے بھی لگائے۔

دوسری جانب مسلم لیگ (ن) کے رہنما رانا ثنا اللہ نے کہا کہ شہباز شریف نے پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی چیئرمین شپ سے استعفیٰ نہیں دیا۔

اجلاس کے آغاز میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے شہباز شریف کو پی اے سی کی ’چیئرمین شپ چھوڑنے‘ پر تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان مسلم لیگ (ن) نے انہیں اس کمیٹی کا چیئرمین بنانے کے لیے حمایت کی تھی۔

جس پر رانا ثنا اللہ نے تقریبًا یو ٹرن لیتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف نے پی اے سی کی چیئرمین شپ سے استعفیٰ نہیں دیا، اس کے ساتھ انہوں نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے دریافت کیا کہ ’کیا آپ کو ان کا استعفیٰ موصول ہوا؟‘۔

جس پر اسپیکر قومی اسمبلی نے نفی میں جواب دیتے ہوئے کہا کہ انہیں میڈیا کے ذریعے معلوم ہوا کہ شہباز شریف نے پی اے سی کے عہدے سے دستبرداری اختیار کرلی۔

جس پر رانا ثنا اللہ نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہ وزیر خارجہ کو شہباز شریف کے استعفیٰ کے بارے میں کیسے معلوم ہوا کیا انکی شہباز شریف سے فون پر بات چیت ہوئی تھی؟۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں اس بات کا فیصلہ ہوا تھا کہ میاں شہباز شریف کو پی اے سی کے چیئرمین شپ نہیں سنبھالنی چاہیے کیوں کہ وہ ناگزیر وجوہات کی بنا پر کمیٹی کو وقت نہیں دے سکتے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ پارلیمانی کمیٹی نے اس فیصلے کو حتمی شکل دینے کے لیے شہباز شریف کو بھجوادیا ہے لیکن انہوں نے اب تک اس حوالے سے فیصلہ نہیں کیا کہ آیا وہ عہدے سے دستبرداری اختیار کریں گے یا یہ عہدہ اپنے پاس ہی رکھیں گے۔

اسمبلی اجلاس کے بدھ تک ملتوی ہونے کے بعد اپوزیشن رہنماؤں نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے حکومت کو خبردار کیا کہ اگر کسی اپوزیشن رہنما کو حکومت کی ناقص معاشی پالیسیوں پر پارلیمنٹ میں آواز اٹھانے سے روکا گیا تو وہ عوام کو سڑکوں پر لے آئیں گے۔

قومی اسمبلی میں احتجاج کے ساتھ ساتھ اپوزیشن رہنماؤں نے سینیٹ اجلاس کا بھی بائیکاٹ کیا، اس سے قبل مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر جاوید عباسی نے اپنی تقریر میں حکومت کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔

سابق حکمراں جماعت کے سینیٹر کا کہنا تھا کہ ’دیگر ممالک میں کرسمس اور رمضان سے قبل قیمتوں میں رعایت دی جاتی ہے لیکن پاکستان میں حکومت نے ’اتنا بڑا‘ اضافہ کردیا‘۔

متعلقہ خبریں