Daily Mashriq

بھارتی ناظم الامور کی دفتر خارجہ طلبی، سکھ کمیونٹی سے متعلق بے بنیاد الزامات مسترد

بھارتی ناظم الامور کی دفتر خارجہ طلبی، سکھ کمیونٹی سے متعلق بے بنیاد الزامات مسترد

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں اقلیتوں کے ساتھ کسی قسم کے امتیازی سلوک کے حوالے سے زیرو ٹالرنس کا مظاہرہ کیا جاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے کہا کہ بھارتی ناظم الامور گورو اہلووالیا کو دفترخارجہ طلب کیا گیا اور پاکستان کی جانب سے سکھ کمیونٹی سے متعلق بھارت کے بے بنیاد الزمات کو مسترد کر دیا گیا۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق ڈی جی ساؤتھ ایشیا زاہد حفیظ چوہدری کی جانب سے طلبی کا سمن جاری کیا گیا۔

عائشہ فاروقی نے کہا کہ بھارت کے ایسے الزامات کشمیر میں ریاستی دہشت گردی سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، پاکستان اپنے تمام شہریوں کے مساوی حقوق کی ضمانت دیتا ہے، بھارت دوسروں پر انگلی اٹھانے کے بجائے اپنی طرف دیکھے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق پاکستان کا آئین اپنے تمام شہریوں کو مساوی حقوق فراہم کرتا ہے، حکومت پاکستان اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے پرعزم ہے، اقلیتوں سے امتیازی سلوک کے حوالے سے زیرو ٹالرنس کا مظاہرہ کیا جاتا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ دوسروں پر انگلیاں اٹھانے کے بجائے بھارت میں اقلیتوں کا تحفظ کریں، اقلیتوں کی عبادت گاہوں، بشمول مساجد کا تحفظ کیا جائے، بےحرمتی، نفرت پر مبنی جرائم اور موب لنچنگ کا سلسلہ بند کیا جائے۔

متعلقہ خبریں