Daily Mashriq

پشاورمیں چائلڈلیبر،کمسن بچے سڑک کنارے ہی سو جاتے ہیں

پشاورمیں چائلڈلیبر،کمسن بچے سڑک کنارے ہی سو جاتے ہیں

پشاور(نامہ نگار) پشاور میں کم سن بچوں سے مزدوری کرانے کا کاروبار عروج پر پہنچ گیا جس کے باعث سکول جانے کی عمر میںبچے گلی کوچوں ، چوراہوں اور گزرگاہوں میں مختلف اشیاء فروخت کرتے رہتے ہیں ۔ کم سن بچوں سے کاروبار کرانے والے افراد ان بچوں کو پشاور کے پوش علاقوں یونیورسٹی ٹائون ، حیات آباد، گلبرگ ، صدر اور دیگر مقامات پر استعمال کرتے ہیں ان بچوں کو ٹافیاں، ببل گم ، چاکلیٹ اور دیگر کم قیمت اشیاء ایک ٹوکری میں سجا کر فروخت کرنے کیلئے دیدی جاتی ہے جسے وہ صاحب حیثیت افراد کے سامنے بیچنے کیلئے آتے ہیں درد دل رکھنے والے شہری ان بچوں سے خریداری تو نہیں کرتے تاہم ان بچوں کو کچھ پیسے دے دیتے ہیں بچوں کے والدین شہریوں کے احساس اور جذبات کو استعمال کرتے ہوئے ان بچوں سے کمائی کرتے ہیں جس کے باعث سکول جانے کی عمر میں یہ بچے مزدوری کرتے ہیں دن بھر مزدور ی کرکے تھکے ہارے یونیورسٹی روڈ کے کئی مقامات پر شام کو سڑک کنارے ہی بیٹھے بیٹھے سو جاتے ہیں اور جنوری کی ان ٹھٹھرتی راتوں میں ان بچوں کو تکلیف میں دیکھ کر شہری مجبورا ادائیگی کردیتے ہیں۔

متعلقہ خبریں