Daily Mashriq


حکمت کے تقاضے

حکمت کے تقاضے

اساتذہ کرام کا ایک مسئلہ ہوتا ہے کہ وہ نصیحتیں بہت کرتے ہیں کچھ اسی طرح کا مسئلہ لکھاریوں کے ساتھ بھی ہوتا ہے یہ بھی اپنے فرمائے ہوئے کو مستند سمجھتے ہیںاور اس قسم کے مواقع کی تلاش میں رہتے ہیں کہ کسی کی رہنمائی کا موقع ملے جب رہنمائی کا یہ سلسلہ چل رہا ہوتا ہے تو اس وقت نصیحت کرنے والے کی اپنی بڑی عجیب حالت ہوتی ہے اسے یوں محسوس ہوتا ہے کہ وہ کوئی عقل کل قسم کی چیز ہے اور جسے نصیحت کی جارہی ہے۔ وہ بیچارا کچھ بھی نہیںجانتا اس کے ساتھ ساتھ اس کے ذہن میں ثواب وغیرہ کا چکر بھی چل رہا ہوتا ہے کہ چلو کچھ اچھی باتوں کے ساتھ ساتھ ثواب بھی حاصل ہو جائے گا۔ اس سے پہلے کہ تمہید زیادہ طویل ہوجائے سیدھی سی بات ہے کہ ہمارے پاس بھی ایک صاحب اپنا مسئلہ لے کر آگئے اندھا کیا چاہے دو آنکھیں! ہم تو ایسے موقعوں کی تلاش میں رہتے ہیں ہمیں اپنی دانش وری بگھارنے کا موقع جو مل جاتا ہے۔اپنے پاس عقیدت سے آئے ہوئے لوگوں کے ساتھ ہمارا ملنا کچھ اس طرح کا ہوتا ہے کہ ہم بولتے کم ہیں اور سنتے زیادہ ہیں کہتے ہیں جو بولا وہ پہچانا گیا ہم نہیں چاہتے کہ ہم پہچانے جائیں اس لیے جب دو چار حضرات کسی موضوع پر گرما گرم بحث کر رہے ہوں تو ہم اپنی رائے دینے سے احتراز کرتے ہیں۔اس میں حکمت یہ ہے کہ اگر رائے جاندار نہ ہو تو پھر دانش وری کا پول کھل جاتا ہے اسی لیے ہم اتنا بڑا رسک لینا ہی نہیں چاہتے لیکن کبھی کبھار ایسا بھی ہوجاتا ہے کہ مشورہ لینے والا ہم سے بھی زیادہ پیدل ہوتا ہے تو پھر ایسے موقعوں پر اسے کچھ نہ کچھ مشورہ تو دینا ہی پڑتا ہے اس کی بعض باتوں سے اتفاق نہ کرنے کی گنجائش بھی نکل آتی ہے اور ہماری دانشوری کا شوق بھی پورا ہوجاتا ہے۔ صاحب جی کا مسئلہ یہ تھا کہ وہ ایک بڑے ادارے کے سربراہ ہیں لیکن بقول ان کے ان سے سارا سٹاف ناراض ہے سٹاف ان سے تعاون نہیں کرتا۔ یہ اور اس طرح کی بہت سی شکایتیں تھیں جنہیں طوالت کے ڈر سے یہاں نہیں لکھا جارہا جب ہم نے ان سے اس حوالے سے دو چار سوالات کیے تومعلوم یہ ہوا کہ وہ اپنے سوا سب کو بددیانت اور کام چور سمجھتے ہیں اگر کوئی کام کر رہا ہے تو اس کی تعریف بھی مبالغے کی حد تک کرتے ہیں خود بھی بہت زیادہ کام کرتے ہیں۔ اپنے دفتر میں بیٹھنے کی بجائے گھومتے رہتے ہیں تاکہ اپنے ادارے کی کارکردگی کو خوب سے خوب تر بناسکیں!ان کا یہ جنون ہی ہے جس کی وجہ وہ سٹاف سے ناخوش ہیں۔ سٹاف میں ہرقسم کے لوگ ہوتے ہیں کام کرنے والے بھی اور کام سے جی چرانے والے بھی جو کام میں دلچسپی نہیں لیتے ان سے بڑی حکمت سے کام لینے کی ضرورت ہوتی ہے ان کو اگر ایک مرتبہ اعتماد میں لے لیا جائے اورانہیں یہ یقین دلا دیا جائے کہ آپ ان سے محبت کرتے ہیں لیکن آپ کی پہلی ترجیح ادارے کی بہتری ہے۔ اس لیے آپ کو بہ امر مجبوری کچھ سخت قسم کے فیصلے بھی کرنے پڑتے ہیں جس پر سٹاف کو ناراض نہیں ہونا چاہیے بلکہ ان کے پیش نظر ادارے کی بہتری ہونی چاہیے لیکن اگر اس کی برعکس آپ سٹاف پر ہروقت تنقید کرتے رہیں اپنے رویے اور قول و فعل سے انہیں یہ باور کرانے کی کوشش کریں کہ تم سب لوگ نااہل اور کام چور ہو تو پھر یقینا حالات بگڑتے ہیں ادارے کا سربراہ لیڈر ہوتا ہے۔ اگر اس میں ایک لیڈر کی خوبیاں نہ ہوں تو ادارے تباہ ہوجایا کرتے ہیں۔ اگر ادارے کا سربراہ یہ سوچے کہ اس نے سٹاف کے دل میں ڈر پیدا کرنا ہے انہیں اپنے قابو میں رکھنا ہے تو وہ صرف املا دیتا رہتا ہے کہ آپ یہ کریں اور وہ کریں اس کی ایک وجہ اس کی برتری اور اپنی ایمانداری کا احساس بھی ہوسکتا ہے جبکہ اچھے لیڈر کے لیے یہ بہت ضروری ہے کہ اسے اپنی ذات پر پورا پورا کنٹرول ہو۔ وہ اپنے غصے اپنے جذبات کو قابو میں رکھ سکے وہ دوسروں کی بات صبر و تحمل سے سننے والا ہو ایک زبان کے مقابلے میں دو کان اسی لیے دیے گئے ہیں کہ سنو زیادہ اور بولو کم ! دوسروں کو سننے کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہوتا ہے کہ ان کا نکتہ نظر بھی سامنے آجاتا ہے رفقائے کار کی سوچ بھی واضح ہوجاتی ہے اس طرح ادارے کے سربراہ کے لیے ان سے کام لینا آسان ہوجاتا ہے ۔انہوں نے اپنے بارے میں یہ بھی بتایا کہ وہ حکومت کی ایک پائی بھی ضائع نہیں کرنا چاہتے اس لیے مالی معاملات پر کڑی نظر رکھتے ہیں۔ لیکن وہ جو کہتے ہیں کہ زیادتی ہر چیز کی بری ہوتی ہے حکومت کا پیسہ بچانے کے شوق میں جو حقدار ہیں اور حکومت جن کی تنخواہوں میں اضافے کا اصولی فیصلہ کرچکی ہے وہ اس میں بھی طرح طرح کی رکاوٹیں پیدا کرتے ہیںہم نے انہیں یہ بھی کہا کہ جناب اگر آپ اپنے کسی سٹاف ممبر سے کسی بھی وجہ سے ناخوش ہیں تو اسے تنہائی میں بٹھا کر سمجھائیں اس پر تنقید بھی کریں تو تنہائی میں اور اگر کوئی سٹاف ممبر اچھا کام کر رہا ہے تو سب کے سامنے اس کی تعریف بھی ہونی چاہیے تنقید تنہائی میںاور تعریف سب کے سامنے ! یہ وہ اصول ہے جس سے دوسروں کی عزت نفس بھی محفوظ رہتی ہے اور ان کی کارکردگی میں اضافہ بھی ہوتا ہے ۔

متعلقہ خبریں