Daily Mashriq


وزیراعظم کا امریکا کے ساتھ فوجی تعاون جاری رکھنے پر زور

وزیراعظم کا امریکا کے ساتھ فوجی تعاون جاری رکھنے پر زور

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے سلامتی کے لیے بڑھتے ہوئے خطرات بالخصوص داعش سے نمٹنے کے لیے پاکستان اور امریکا کے درمیان فوجی تعاون جاری رکھنے پر زور دیا ہے۔

انہوں نے یہ بات امریکی سینٹرل کمانڈ (کینٹکوم) کے جنرل کینتھ میکینزی جونیئر سے گفتگو کے دوران کہی جو 28 مارچ کو عہدہ سنبھالنے کے بعد خطے کے تعارفی دورے پر ہیں اور اس سلسلے میں 2 روز کے لیے پاکستان آئے تھے۔

بات چیت کے دوران عمران خان نے افغانستان میں جاری طویل تنازع کے خاتمے کے لیے بہترین حل کے طور پر افغان فریقین کے درمیان مذاکرات کے آغاز پر زور دیا۔

خیال رہے کہ امریکا نے حال ہی میں افغان فریقین کے درمیان مذاکرات پر ڈیڈلاک توڑنے کے لیے ’ماسکو طرز‘ پر بات چیت کے اپنے نئے منصوبے کے بارے میں آگاہ کیا تھا۔

اس موقع پر وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ ’اسٹیک ہولڈرز کو چاہیے کہ غیر ملکی افواج کی واپسی کے بعد آپس میں مل بیٹھ کر اپنے مستقبل کی سیاست کی شکل کے حوالے سے بات چیت کریں‘۔

اس کے ساتھ انہوں نے سیاسی تصفیے کے ذریعے افغانستان میں امن و استحکام کے پاکستانی حکومت کے عزم کو ایک مرتبہ پھر دہرایا۔

اس کے علاوہ وزیراعظم عمران خان نے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کے اپنی حکومت کے وعدے کا بھی ذکر کیاجس میں انہیں ملک کی تمام سیاسی جماعتوں کی حمایت حاصل ہے۔

اس کے ساتھ انہوں نے انسانی ترقی اور بھرپور معاشی اصلاحات سمی اپنی حکومتی ترجیحات سے آگاہ کیا اور انہوں نے تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ نارمل تعلقات کے پاکستان کے موقف کو دہرایا۔

جنرل میکینزی نے اسلام آباد میں اپنے قیام کے دوران وزیراعظم عمران خان کے ساتھ ساتھ وزیر دفاع پرویز خٹک، سیکریٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ ، چیف آف اسٹاف کمیٹی جنرل قمر باجوہ، چیئرمین جوائنٹ چیف آف اسٹاف کمیٹی جنرل زبیر حیات، چیف آف ایئر اسٹاف ایئرایئر چیف مارشل مجاہد انور اور چیف آف نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر عباسی سے بھی ملاقات کی۔

ملاقات کے بارے میں امریکی سفارت خانے ست جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ جنرل میکینزی نے خطے کی سلامتی اورع استحکام کے لیے امریکی عہد کا اعادہ کیا۔

متعلقہ خبریں