Daily Mashriq

مضاربہ ریفرنسز: نیب نے 2 ارب روپے سے زائد برآمد کرلیے

مضاربہ ریفرنسز: نیب نے 2 ارب روپے سے زائد برآمد کرلیے

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب) نے 7 سال قبل سامنے آنے والے اربوں روپے مالیت کے مضاربہ/مشارکہ اسکیم میں 30 ریفرنسز دائر کردیے اور 2 ارب 29 کروڑ 10 لاکھ روپے نقد اور چند کیسز میں اثاثوں کی صورت میں برآمد کرلیے۔

 رپورٹ کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کی زیر صدارت بورڈ اجلاس میں دی گئی معلومات کے مطابق نیب نے 45 افراد کو گرفتار بھی کیا۔

نیب کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق نیب راولپنڈی نے احتساب عدالتوں میں 30 ریفرنسز دائر کیے اور چند کیسز میں 64 کروڑ 48 لاکھ 77 ہزار روپے نقد وصول کیے جبکہ ایک ارب 64 کروڑ 65 لاکھ کے اثاثے منجمد کیے۔

واضح رہے کہ مضاربہ/مشارکہ اسکینڈل 2013 میں سامنے آیا تھا جس میں چند مذہبی رہنما ملوث تھے اور بعد ازاں انہیں ان ریٹائرڈ سرکاری ملازمین اور بیواؤں سمیت بے قصور لوگوں کو دھوکا دینے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھاجو اپنے محنت سے کمائے گئے پیسوں کی اسلامی سرمایہ کاری اسکیموں میں سرمایہ کاری کرنا چاہتے تھے۔

گرفتار کیے گئے مذہبی رہنماؤں میں مفتی احسان الحق، مفتی ابرار الحق، حافظ محمد نواز، معین اسلم، عبید اللہ، مفتی شبیر احمد عثمانی، سجاد احمد، آصف جاوید، غلام رسول ایوبی، محمد حسین احمد، حامد نواز، محمد عرفان، بلال خان بنگش، مطیع الرحمن، محمد نعمان قریشی، سیّد عکشید حسین، محمد عادل بٹ، محمد ثاقب، عمیر احمد، عقیل عباسی، مفتی حنیف خان، نذیر احمد ابراہیم اور سیف اللہ سمیت 45 ملزمان شامل ہیں۔

اجلاس میں یہ بھی بتایا گیا کہ احتساب عدالت اسلام آباد میں مضاربہ کیس میں نجم الدین اور غلام رسول کو 14 سال قید اور 6 کروڑ 70 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی گئی، اس کے علاوہ ملزمان نجم الدین اور غلام رسول ایوبی کے خلاف تمام الزامات سچ ثابت ہوئے ہیں۔

ملزمان کو نیب راولپنڈی نے مضاربہ اسکینڈل میں اسلامی سرمایہ کاری کے نام پر بڑے پیمانے پر عوام سے دھوکے کے الزامات پر گرفتار کیا تھا، احتساب عدالت نے دونوں ملزمان کی پراپرٹی بھی ضبط کرنے کا حکم دیا تھا۔

اجلاس میں یہ بھی بتایا گیا کہ نیب راولپنڈی نے چیف ایگزیکٹو آفیسر میسرز فیاضی گروپ آف انڈسٹریز مفتی احسان الحق اور دیگر 9 ملزمان کو 10 سال قید اور ایک ارب روپے جرمانہ کی سزا سنائی جو نیب کی تاریخ کی سب سے زیادہ سزا ہے۔

اجلاس کے دوران یہ بتایا گیا کہ نیب راولپنڈی نے بدعنوانی اور اسلامی سرمایہ کاری کے نام پر عوام سے دھوکہ دہی سے 9 کروڑ 555 لاکھ روپے لوٹنے کے الزامات پر مضاربہ کیس میں چیف ایگزیکٹو آفیسر اسلامک انویسٹمنٹ محمد نذیر اور دیگر ملزمان کے خلاف احتساب عدالت راولپنڈی میں بدعنوانی کا ریفرنس دائر کیا ہے۔

نیب راولپنڈی نے مضاربہ کیس میں بدعنوانی اور اسلامی سرمایہ کاری کے نام پر عوام سے دھوکہ دہی سے 4 کروڑ 84 لاکھ روپے لوٹنے کے الزامات پر بلال ٹریڈنگ کارپوریشن کے محمد بلال اور دیگر ملزمان کے خلاف احتساب عدالت راولپنڈی میں بدعنوانی کا ریفرنس دائر کیا ہے۔

نیب راولپنڈی نے مضاربہ کیس میں بدعنوانی اور اسلامی سرمایہ کاری کے نام پر عوام سے دھوکہ دہی سے 59 لاکھ روپے لوٹنے کے الزامات پر چیف ایگزیکٹو آفیسر الجزیرہ انٹرنیشنل محمد یاسر اور دیگر ملزمان کے خلاف احتساب عدالت راولپنڈی میں بدعنوانی کا ریفرنس دائر کیا ہے۔

مضاربہ کیس میں بدعنوانی اور اسلامی سرمایہ کاری کے نام پر عوام سے دھوکہ دہی سے 2 کروڑ 50 لاکھ روپے لوٹنے کے الزامات پر چیف ایگزیکٹو آفیسر میسرز البراکہ مارکیٹنگ کمپنی پرائیویٹ لمیٹڈ اور دیگر ملزمان کے خلاف احتساب عدالت راولپنڈی میں بدعنوانی کا ریفرنس دائر کیا ہے۔

متعلقہ خبریں