Daily Mashriq

دیر آید درست آید

دیر آید درست آید

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر صدارت کور کمانڈرز اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان2014کا جائزہ اور نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کے لیے ریاستی اداروں سے تعاون اور اس سے متعلق حکومتی اقدامات پر من وعن عملدرآمد کے عزم کے اظہار کے بعد نیشنل ایکشن پلان کے باقی ماندہ اور قابل توجہ حصوں کے حوالے سے مزید اقدامات اور پیشرفت فطری امر ہوگا جو عالمی سطح پر پاکستان کے حوالے سے پیدا شدہ غلط فہمیوں کے ازالے کا سبب بنے گا۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد میں حکومتی فیصلوں پر عمل تیز کرنے کی جو ہدایت کی ہے وہ یقینا عسکری اداروں کے دائرہ اختیار ہی سے متعلق ہوں گے جو ان کی مزید سنجیدگی کا مظہر ہیں۔ ہم سمجھتے ہیں کہ قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد میں سول اداروں کاکردار و عمل زیادہ اہم ہے جس پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ خاص طور پر حکومت کو اس پالیسی پر عملدرآمد میں مزید سنجیدگی اختیار کرنا ہوگی۔ سوال یہ ہے کہ 2014ء میں نیشنل ایکشن پلان پر قومی اتفاق رائے کے بعد وہ کونسے اسباب و عوامل تھے جن کی بنیاد پر اس پر عملدرآمد میں تاخیر ہوئی۔ بہرحال گزشتہ را صلوات کے مصداق آئندہ اور لمحہ موجود سے احتیاط کی ضرورت ہے اور ا یسے اقدامات ضروری ہیں جو نہ صرف نظر آئیں بلکہ دنیا کے لئے اس درجہ قابل قبول بھی ہوں کہ شکوک و شبہات کا ازالہ ہو اور پاکستان پر معاشی و اقتصادی و اخلاقی غرض کسی طور پر بھی دبائو نہ ڈالا جاسکے۔ جہاں تک حکومت کی جانب سے نیشنل ایکشن پلان پر کسی دبائو میں نہ آکر عملدرآمد بارے بیان کا تعلق ہے یہ ہر چند کہیں کہ ہے نہیں ہے والا معاملہ اس لئے ہے کہ اس وقت حالات اس امر کے متقاضی ہیں کہ اس طرح کے اقدامات کے بغیر چھٹکارا ممکن نہیں۔ اگر ہم نے رضا کارانہ طور پر اور بروقت آج کل کے اقدامات پہلے کر چکے ہوتے تو آج صورتحال مختلف ہوتی ۔ عالمی شکوک و شبہات کا بھی ازالہ ہوچکا ہوتا بہر حال دیر آید درست آید۔

پارکنگ کے سنگین مسئلے پر عملی توجہ اور اقدام

وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کے صوبے کی پہلی سکائی لائن پارکنگ کے سنگ بنیاد رکھنے کو صوبائی دارالحکومت میں مصروف سڑکوں کے کنارے پارکنگ کی روک تھام اور لوگوں کو پارکنگ کی معقول سہولت کی فراہمی کا پہلا قدم قرار دیا جاسکتا ہے۔ اس کے ساتھ ہی اگر شادی ہالز‘ نجی سکولوں‘ تجارتی مراکز اور کئی منزلہ رہائشی و کاروباری مراکز میں میڈیکل پلازوں پارکنگ کے لئے موزوں اور کافی جگہ مختص کرنے کو یقینی بنانے کے اقدامات میں کوتاہی نہ کی جائے تو صوبائی دارالحکومت کے شہریوں اور عوام کا ایک گمبھیر مسئلہ حل ہوسکتا ہے یا کم از کم اس میں کمی ممکن ہوگی۔ وزیر اعلیٰ نے اس موقع پر بی آر ٹی کے تئیس مارچ کو مکمل نہ ہونے پر جس سخت ایکشن کاعندیہ دیا ہے حالات و واقعات کے تناظر میں وزیر اعلیٰ کو ان سخت اقدامات کے وعدے کو پورا کرنے کی تیاری کرلینی چاہئے تاکہ عین وقت پر وعدے کی تکمیل میں کوئی کسر باقی نہ رہے۔توقع کی جانی چاہئے کہ سکائی لائن پارکنگ کے منصوبے کی تعمیر میں تاخیر کا مظاہرہ نہیں کیا جائے گا اور جلد سے جلد اس کی تعمیر مکمل کرکے شہر کے انتہائی گنجان آباد کاروباری علاقے کی کاروباری برادری اور عوام کو پارکنگ کی مناسب سہولت کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے گا۔

وزیر اطلاعات کا دورہ مشرق

وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے مشرق گروپ کے دفاتر کے دورے کے موقع پر بی آر ٹی جیسے بڑے منصوبے کی تکمیل میں وقت لگنے کا جو اعتراف کیا ہے اگر سابق وزیر اعلیٰ اس بڑے منصوبے کو چھ ماہ میں مکمل کرنے کادعویٰ نہ کرتے تو اس قدر تنقید کی گنجائش نہ تھی۔ بہر حال یہ ایک بہت بڑا منصوبہ ہے جس کی دوران تکمیل عوام اکتاہٹ میں رد عمل کا اظہار ضرور کر رہے ہیں تاہم اس کی تکمیل و استفادے کے بعد یہ صوبائی حکومت کاایک پر سہولت منصوبہ قرار پائے گا۔ اس موقع پر وزیر اطلاعات نے مشرق گروپ کے حوالے سے جن خیالات کااظہار کیا اس پر ہم ان کے مشکور ہیں اور اس عزم کا اعادہ کرتے ہیں کہ مشرق اخبار اور ٹی وی کو صوبے کے عوام کے جذبات کا ترجمان بنانے اور معیاری صحافت کے فروغ میں اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ ہماری صوبائی حکومت اور وزیر اطلاعات سے بجا طور پر توقع ہے کہ وہ مثبت تنقید اور اختلاف رائے کا حسب دستور خیر مقدم کرتے رہیں گے تاکہ صوبے کے عوام کی عوامی نمائندگی اور صحافتی نمائندگی کا حق ادا ہوسکے۔

متعلقہ خبریں