Daily Mashriq

وزیراعظم کی صدارت میں پنجاب کی صوبائی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس

وزیراعظم کی صدارت میں پنجاب کی صوبائی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس

پنجاب میں نئے بلدیاتی نظام کے تحت دیہی اور شہری علاقوں کے لیے علیحدہ مقامی حکومتیں ہوں گی۔ شہری علاقوں میں نیبر ہڈ کونسلز جبکہ ہر موضع میں پنچائتی نظام قائم کیا جائے گا۔ یہ بات وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت لاہورمیں پنجاب کی صوبائی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کو بریفنگ کے دوران بتائی گئی۔ 

اجلاس کو بتایا گیا کہ مقامی حکومتوں کے نئے نظام کے تحت تحصیل کونسلز کے انتخابات جماعتی بنیادوں جبکہ نیبر ہڈ کونسلز اور پنچایت کے انتخابات غیر جماعتی بنیادوں پر ہوں گے۔اس کے ساتھ ایک سے زیادہ میٹروپولیٹن اور میونسپل کارپوریشنوں کی تعداد میں اضافہ بھی تجویز کیا گیا ہے۔ ہرسطح کی مقامی حکومتوں کو فنڈز کی براہِ راست فراہمی کے علاوہ اضافی فنڈز بھی فراہم کیے جائیں گے۔ 

وزیراعظم نے کہا کہ صوبے میں مقامی حکومتوں کے مربوط اور جامع نظام سے طرزِ حکومت میں انقلابی تبدیلی رونما ہوگی۔ انھوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں تحریک انصاف کی حکومت کے دئیے ہوئے مقامی حکومتوں کے نظام پر عوام نے بھرپور اعتماد کا اظہار کیا جس سے صحت،تعلیم اور امن وامان کی صورت حال میں واضح بہتری آئی ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ پنجاب میں مقامی حکومتوں کے مجوزہ نظام سے ایک نئی سوچ اُبھرے گی جس میں نچلی سطح تک اختیارات کی منتقلی سے عام آدمی حقیقی طور پر بااختیار ہوگا، مقامی مسائل فوری اور شفاف طریقے سے حل کیے جا سکیں گے اور پائیدار ترقی ممکن ہوگی۔ انھوں نے کہا کہ جب تک ہم اپنے شہروں کا نظام ٹھیک نہیں کریں گے بہتری کی توقع نہیں کی جا سکتی۔ مقامی حکومتوں کا نیا نظام حقیقی معنوں میں مثبت تبدیلی لائے گا۔ 

وزیراعظم عمران خان نے صوبےمیں گندم کی فصل میں کاشت کاروں کو مناسب معاوضے کی ادائیگی کو یقینی بنانے اور اس ضمن میں تمام بے قاعدگیوں کو ختم کرنے کی ہدایت کی ۔ انھوں نے رمضان المبارک میں مہنگائی اور منافع خوری کے تدارک کے لئے خصوصی اقدامات کی بھی ہدایت کی ۔

ارکان صوبائی اسمبلی نے وزیراعظم کو پنجاب میں مقامی حکومتوں کانیا نظام متعارف کرانے پر خراج تحسین پیش کرتے ہوئے اس پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا۔ انکا کہنا تھا کہ تحصیل اور پنچائیت کی سطح پر نئی مقامی حکومتوں کا قیام ایک جرأت مندانہ فیصلہ ہے جس کے ثمرات سے عام آدمی مستفید ہوگا اور عوامی مسائل مقامی سطح پر حل ہو سکیں گے ۔

متعلقہ خبریں