Daily Mashriq

افغانستان میں قیامِ امن کا چیلنج

افغانستان میں قیامِ امن کا چیلنج

سال 2017ء میں افغانستان پاکستان کے لئے سب سے بڑا سفارتی چیلنج رہا جس کے سٹریٹجک ، سیکورٹی ، معاشی اور سیاسی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ دوسری جانب امریکہ نے پاکستان پراپنے مطلوبہ مفادات کے حصول کیلئے بے تحاشہ دبائو ڈالا لیکن چین کی معاونت کی وجہ سے پاکستان اس دبائو کو برداشت کرنے میں کامیاب رہا ۔ بظاہر ایسا لگ رہا ہے کہ امریکہ اور چین سمیت دیگر کئی اتحادی ممالک پاکستان پر دبائو اسلئے ڈال رہے ہیں کہ افغانستان میں دیرپا امن اور استحکام قائم کیا جاسکے جس کیلئے کبھی سخت بیان دیئے جاتے ہیں اور کبھی نرم لہجے میں پاکستان کو ہدایات جاری کی جاتی ہیں۔ پاکستان کے لئے دونوں قسم کے دبائو کو برداشت کرتے ہوئے افغانستان میں استحکام کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کیساتھ ساتھ اپنے مفادات کا تحفظ کرنا کسی چیلنج سے کم نہیں ہے۔ اگرچہ افغانستان میں قیامِ امن پورے خطے کے امن کیلئے ناگزیر ہے اور تمام سٹیک ہولڈرز کو اس سلسلے میں مل کر کام کرنا چاہیے لیکن اگر موجودہ صورتحال کو دیکھا جائے تو امریکہ اور دیگر ممالک کی جانب سے آنیوالے بیانات سے ایسے لگتا ہے جیسے افغانستان میںقیامِ امن سمیت تمام مسائل کا حل صرف اور صرف پاکستان کی ذمہ داری ہے۔امریکہ اور چین یہ سمجھتے ہیں کہ افغانستان میں قیامِ امن کیلئے پاکستان کا کردار بہت ضروری ہے کیو نکہ افغانستان میں اتحادی افواج کیخلاف برسرِ پیکار طالبان پر پاکستان کے ذریعے دبائو ڈالا جاسکتا ہے اور پاکستان کے ذریعے ہی طالبان کو مذاکرات کی میز پر لایا جاسکتا ہے۔اس کے علاوہ چین کی جانب سے وسطی ایشیاء کو چین سے ملانے والے منصوبوں کے تحت افغانستان میں مختلف پراجیکٹس کے ذریعے اقتصادی سرگرمیوں کو فروغ دیکر افغانستان میں استحکام لایا جاسکتا ہے لیکن اس عمل میں بھی پاکستان کو اپنا کردار نبھانا ہوگا۔اسی طرح امریکہ بھی وسطی ایشیا ء سے بھارت تک ایک انرجی کوریڈور بنانا چاہتا ہے جس کیلئے افغانستان میں امن ناگزیر ہے۔ یہ بات سچ ہے کہ افغانستان کے مسئلے کے حل کیلئے پاکستان عسکری اور سیاسی لحاظ سے معاونت کرسکتا ہے لیکن جو بات پاکستان کو پریشان کرتی ہے وہ دہشت گردی کے خاتمے کے حوالے سے پوری دنیا کی پاکستان سے لگائی جانیوالی توقعات ہیں۔ افغانستان کی خراب صورتحال کا فائدہ افغان سیاستدان اٹھاتے ہیں جو اپنی ناکامیوں کا بوجھ ملکی سیکورٹی کی خراب صورتحال ڈال دیتے ہیں۔ عام طور پر یہ سمجھا جاتا ہے کہ چین پاکستان کی فیصلہ سازی پر اثر انداز ہوسکتا ہے اور امریکہ افغانستان کے حکومتی امور میں مداخلت کرسکتا ہے اسلئے اگر امریکہ اور چین چاہیں تو افغانستان میں قیامِ امن جیسے مشکل ہدف کو حاصل کیا جاسکتا ہے۔افغان اور بین الاقوامی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق حکومت کی طالبان کیساتھ مذاکرات میں ناکامی کے باوجودطالبان قائدین اور افغان انٹیلی جنس عہدیداروں اور طالبان افغانستان کے مستقبل کے حوالے سے بات کرنے کیلئے مسلسل رابطے میں رہتے ہیں۔امن عمل کے آغاز کیلئے افغانستان میں افغان ہائی پیس کونسل (ایچ پی سی) کا قیام عمل میں لایا گیا تھا لیکن یہ کونسل اپنے مقاصد حاصل کرنے میں ناکام رہی ہے۔ ایچ پی سی کے چیف محمد کریم خلیلی نے پاکستانی ذرائع ابلاغ سے بات کرتے ہوئے طالبان کے ساتھ رابطے کے دیگر چینلز کے وجود سے انکار نہیں کیا لیکن یہ ضرور کہا کہ سرکاری سطح پر طالبان سے بات کرنے کا اختیار صرف کونسل کے پاس ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے کسی بھی طالبان کمانڈر کیساتھ کونسل کے انفرادی رابطوں کی تردید کرتے ہوئے طالبان شوریٰ کیساتھ جامع مذاکرات کی ضرورت پر زور دیا۔ افغانستان میں ایچ پی سی جیسی کمزور امن کونسل کی موجودگی کی وجہ سے افغانستان، چین ، پاکستان اور امریکہ پر مشتمل چار فریقی گروپ کو افغانستان سمیت پورے خطے میں قیام ِ امن کیلئے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ بدقسمتی سے ملا عمر کی ہلاکت کی خبر سامنے آنے کے بعد سے مذکورہ چار فریقی گروپ غیر فعال ہوچکا ہے جس کی وجہ سے پاکستان پر افغانستان کے حالات کی بہتری کے حوالے سے دبائو میں اضافہ ہوا ہے۔ اس دبائو سے نمٹنے کیلئے پاکستان ’’عسکری سفارت کاری ‘‘ کا سہارا لے رہا ہے جس کے تحت اکتوبر 2017ء میں جنرل قمر جاوید باجوہ نے افغانستان کا دورہ کرکے دونوں ممالک کے درمیان تعاون بڑھانے کا ایک معاہدہ کیا تھا۔چین نے بھی افغانستان کے حالات کی بہتری کے لئے افغانستان، پاکستان اور چین پر مشتمل ایک سہ فریقی فورم بنایا ہوا ہے جس کا مقصد پاکستان اور افغانستان کے درمیان اعتماد کی بحالی سمیت پورے خطے میں امن کا قیام ہے۔ اگرچہ مذکورہ فورم اور دیگر کئی پلیٹ فارمز پاک افغان تعلقات میں بہتری کے لئے اپنا اپنا کردار ادا کر رہے ہیں لیکن دونوں ہمسایوں کے تعلقات اس وقت تک معمول پر نہیں آسکتے جب تک دونوں ممالک کے معاشی اور سیاسی مفادات مشترک نہیں ہو جاتے۔ 

(بشکریہ: ڈان،ترجمہ: اکرام الاحد)

متعلقہ خبریں