Daily Mashriq


ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کی مبینہ جعلی ڈگری سے متعلق کیس کی سماعت موخر

ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کی مبینہ جعلی ڈگری سے متعلق کیس کی سماعت موخر

ویب ڈیسک:سپریم کورٹ نے ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کی مبینہ جعلی ڈگری سے متعلق کیس ڈی لسٹ کر دیا۔

سپریم کورٹ نے قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور کے ڈائریکٹر جنرل شہزاد سلیم کی جعلی ڈگری سے متعلق کیس 12 نومبر کو سماعت کے لیے مقرر کیا تھا اور چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے اس کی سماعت کرنی تھی۔ تاہم اب یہ کیس ڈی لسٹ کر دیا گیا ہے۔ رجسٹرار سپریم کورٹ نے درخواست گزار اسد کھرل کو جاری کردہ سماعت میں پیش ہونے کا نوٹس بھی واپس لے لیا ہے۔

اضح رہے سپریم کورٹ آف پاکستان نے قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور کے ڈائریکٹر جنرل شہزاد سلیم کی مبینہ ڈگری کے معاملے کا کیس 12 نومبر کو سماعت کیلئے مقرر کیا تھا۔

ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کے خلاف مبینہ جعلی ڈگری کی درخواست ایک شہری نے دائر کی تھی۔

خیال رہے کہ جب ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کی ڈگری جعلی ہونے کی خبریں زیر گردش ہوئی تو نیب ترجمان نے انھیں جھوٹی قرار دیتے ہوئے یکسر مسترد کر دیا تھا۔

نیب کے ترجمان کی جانب سے جاری وضاحتی بیان میں کہا گیا تھا کہ نیب افسر کی ڈگری 2002ء میں جاری ہوئی اور ہائر ایجوکیشن کمیشن سے باقاعدہ تصدیق شدہ ہے۔ ایسے ہتھکنڈوں سے نیب آفیسر پر دباؤ نہیں ڈالا جا سکتا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ بعض عناصر ایسے ہتھکنڈوں سے ڈی جی نیب کو دباؤ میں لانے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن وہ ایمانداری سے اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں۔

متعلقہ خبریں