Daily Mashriq


نگران وزیراعظم کیلئے مشاورت کا آغاز،اپوزیشن لیڈرکی وزیراعظم اورشاہ محمودقریشی سےملاقاتیں

نگران وزیراعظم کیلئے مشاورت کا آغاز،اپوزیشن لیڈرکی وزیراعظم اورشاہ محمودقریشی سےملاقاتیں

ویب ڈیسک:وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کی ملاقات، ایک دن قبل حکومت تحلیل کرنے کی تجویز مسترد۔

 تفصیلات کے مطابق وزیراعظم ہاوس اسلام آباد میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کی۔ملاقات کے دوران نگراں وزیراعظم کیلئےمختلف ناموں پر مشاورت کی گئی ،ملاقات میں ملک کی مجموعی صورتحال، قومی اسمبلی اور سینٹ کے اجلاس، قانون سازی سے متعلق امور پر بھی بات چیت ہوئی۔

بعدازاں اپوزیشن لیڈر نے پی ٹی آئی رہنما شاہ محمود قریشی سے بھی ملاقات کی ،ملاقات کے دوران پیپلز پارٹی کے نوید قمراور پی ٹی آئی کی شیریں مزاری بھی موجود تھیں،اپوزیشن لیڈر نے رہنماپی ٹی آئی سے بھی نگران وزیراعظم سے مشاورت مشاورت کی اورانہیں وزیراعظم سے ملاقات سے متعلق آگاہ کیا۔

 وزیراعظم اور اپوزیشن رہنماؤں سے ملاقاتوں کے بعد قائدحزب اختلاف خورشیدشاہ نے میڈیا سے بات چیت کے دوران بتایا کہ اپوزیشن اور وزیراعظم نے تاحال نگراں وزیراعظم کیلئے کوئی نام تجویز نہیں کیا، اورمشاورت کے بعد نام دینے کا کہا ہے، ہماری کوشش ہے کہ 15 مئی سے پہلے پہلے نگراں وزیراعظم کا نام فائنل کر لیں۔

اپوزیشن لیڈر نے بتایا کہ وزیراعظم سے کہا کہ حکومت ایک دن پہلے تحلیل کر دی جائےتاکہ  آئین کے مطابق مدت کی تکمیل سے ایک روز قبل تحلیل کرنے کے باعث 90 روز میں الیکشن کرانے کا موقع مل سکے جبکہ حکومت مدت کیجانب سے مدت پوری کیے جانے کے بعد  60 روز میں الیکشن کرانے ہوتے ہیں،تاہم وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے اپوزیشن لیڈر کی تجویز مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ آخری روز بھی اجلاس ہو گا۔

خورشید شاہ نے مزید کہا کہ وزیراعظم سے بجٹ پر بھی بات ہوئی ہے، ہم نے کہا ہے کہ بجٹ 4 ماہ کا ہونا چاہیے، موجوددہ حکومت کا پورے سال کا بجٹ پیش کرنے کا جواز نہیں بنتا، نئی آنے والی حکومت کو آ کر بجٹ دینا چاہیے۔واضح رہے کہ موجودہ حکومت کی مدت 31 مئی کو پوری ہوگی جس کے بعد نگراں حکومت اقتدار سنبھالے گی اور 60 روز میں عام انتخابات کرائے گی۔

متعلقہ خبریں