Daily Mashriq

لاہور ہائی کورٹ کے جج نے عمران خان نا اہلی کیس کی سماعت سے معذرت کرلی

لاہور ہائی کورٹ کے جج نے عمران خان نا اہلی کیس کی سماعت سے معذرت کرلی

لاہور ہائیکورٹ میں وزیراعظم عمران خان کی نا اہلی کے لیے دائر 2 درخواستوں پر جسٹس شاہد وحید نے سماعت کرنے سے معذرت کرلی۔

جسٹس شاہد وحید نے ذاتی وجوہات کی بنا پر سماعت سے معذرت کی جس کے بعد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کو بینچ کے لیے جج نامزد کرنے کی درخواست بھیج دی گئی۔

جسٹس وحید اور جسٹس مامون رشید شیخ پر مشتمل لاہور ہائی کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے عبدالوہاب اور مدثر کی درخواستوں پر سماعت کی۔

دونوں نے دعویٰ کیا کہ وزیر اعظم عمران خان نے 2018 کے عام انتخابات میں ٹیرن وائٹ کو اپنی بیٹی ماننے سے انکار کیا تھا۔

دوران سماعت سرکاری استغاثہ کا کہنا تھا کہ ’صرف ووٹر ہی یہ درخواست دائر کر سکتا ہے اور درخواست گزار اس حلقے کا ووٹر نہیں جہاں سے عمران خان منتخب ہوئے‘۔

عدالت نے استفسار کیا کہ اگر درخواست گزار ووٹر نہیں ہے تو وہ درخواست کیوں دائر نہیں کر سکتا، یہ درخواست کسی بھی مرحلے پر دائر کی جا سکتی ہے۔

درخواستگزا کا کہنا تھا کہ عمران خان نے کاغذات نامزدگی میں اپنی بیٹی ٹیرن وائٹ کا ذکر نہیں کیا جس کی وجہ سے وہ آرٹیکل 62، 63 پر پورا نہیں اترتے ہیں۔

آرٹیکل 62 اور 63 کے مطابق رکن قومی اسمبلی بننے کے لیے آپ کو صادق اور امین ہونا لازم قرار دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ ٹیرن وائٹ سیتا وائٹ کی بیٹی ہیں اور یہ الزام بھی عام ہے کہ ٹیرن وائٹ عمران خان کی بیٹی ہیں۔

قبل ازیں رواں سال 21 جنوری کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے بھی اس ہی طرح کی ایک درخواست کو نجی معاملہ قرار دیتے ہوئے مسترد کیا تھا۔

درخواست گزار نے موقف پیش کیا تھا کہ وزیر اعظم کو 2018 کے عام انتخابات میں کاغزات نامزدگی میں ٹیرن وائٹ کی والد ہونے کی بات چھپائی تھی۔

متعلقہ خبریں