Daily Mashriq

امریکہ اور ایران کے درمیان بڑھتی کشیدگی

امریکہ اور ایران کے درمیان بڑھتی کشیدگی

ایران کے صدر حسن روحانی نے امریکہ کے ساتھ بڑھتی ہوئی کشیدگی کے پیش نظر سیاسی جماعتوں میں اتحاد کی ضرورت پر زور دیا ہےجبکہ امریکہ نے فضائی دفاعی میزائل سسٹم "پیٹریاٹ" کو اپنے جنگی بحری بیڑے "یو۔ایس۔ایس آرلنگٹن " کے ہمراہ مشرق وسطیٰ کی جانب روانہ کر دیا ہے۔

ایرانی صدر حسن روحانی نے ایک تقریب سے خطاب میں کہا کہ انیس سو اسّی کی ایران ،عراق جنگ کی نسبت آج صورتحال مختلف ہے جب صرف ایران پر ہتھیاروں کی خریداری پر پابندی تھی لیکن آج ایران کو بینکوں، تیل کی برآمداور دیگر برآمدات اور درآمدات جیسی پابندیوں کا سامنا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم متحد ہوکر تمام مشکلات پر قابو پا سکتے ہیں۔صدر روحانی نے کہا کہ امریکہ کی جانب سے مشرق وسطیٰ میں فضائی دفاعی میزائل سسٹم "پیٹریاٹ" اور بحری جنگی بیڑوں کی تعیناتی نفسیاتی جنگی حربہ ہے جس کا مقصد ایران کو دھمکانا ہے۔

دوسری جانب امریکہ نے فضائی دفاعی میزائل سسٹم"پیٹریاٹ" کو جنگی بیڑے "یو۔ ایس۔ ایس آرلنگٹن" کے ہمراہ مشرق وسطیٰ کی جانب روانہ کر دیا ہےجو خلیجِ فارس میں پہلے سے تعینات "یو۔ایس۔ایس ابراہام لنکن" سے جا ملے گاجبکہ بمبار B-52 طیارے بھی قطر میں امریکی فوجی اڈے پر اُتر گئے ہیں ۔امریکی صدر ٹرمپ نے ایران پر مکمل اقتصادی، مالیاتی اور تجارتی پابندیاں عائد کردی ہیں۔ تاہم یورپ اور دیگر ممالک امریکہ کی ان پابندیوں کی مخالفت کر رہے ہیں تاکہ دوہزار پندرہ میں طے پانے والے ایٹمی معاہدے کو کسی طور قائم رکھا جائے۔

متعلقہ خبریں