Daily Mashriq


گویم مشکل و نہ گویم مشکل

گویم مشکل و نہ گویم مشکل

وزیراعظم عمران خان نے قوم کو یقین دلایا ہے کہ ملک موجودہ مشکل صورتحال سے سرخرو ہو کر نکلے گا اور اچھا وقت آئے گا۔ جب قوم بدعنوان قیادت کو برداشت کرتی ہے تو اس کی قیمت ادا کرنا پڑتی ہے۔ ڈرنے یا گھبرانے کی ضرورت نہیںقوم حوصلہ رکھے ملک کوان مشکل حالات سے نکالوں گا۔موجودہ بحران سے نکلنے اور قرضے کی قسطیں ادا کرنے کیلئے ہمیں مزید قرضے چاہئیں۔اگر منی لانڈرنگ روک لی جاتی تو آج ہمیں ڈالر کی کمی کا سامنا نہ ہوتایہ قلیل مدتی پریشانی ہے قوموں کی زندگی میں اونچ نیچ آتی رہتی ہے آئی ایم ایف کے پاس جانے سے قیامت نہیں آگئی اصلاحات کے اثرات 6ماہ بعد نظرآئیں گے۔عمران خان نے کم آمدنی والے طبقہ اور غریب عوام کو 50 لاکھ گھروں کی فراہمی کیلئے نیا پاکستان ہاوسنگ منصوبہ شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس اقدام سے غریبوں کو چھت میسر آنے کے ساتھ ساتھ نوجوانوں کو روزگار ملے گا اور اقتصادی سرگرمی سے شرح نمو میں اضافہ ہو گا، اس ضمن میں ون ونڈو آپریشن کیلئے 90 روز میں نیا پاکستان ہائوسنگ اتھارٹی کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے جس کی نگرانی وہ خود کریں گے۔وزیراعظم نے کہا کہ ترسیلات زر کی مد میں 20 ارب ڈالر پاکستان آتے ہیں، ہم نے اس کا مطالعہ کیا، جتنی مقدار میں ترسیلات زر بینکاری ذرائع سے آتی ہیں اتنے ہی بے قاعدہ عمل کے ذریعے آتی ہیں، منی لانڈرنگ اور بے قاعدہ طریقہ سے ترسیلات زر کو روک دیا جائے تو ہمیں قرضہ نہیں لینا پڑے گا۔وزیر اعظم عمران خان ایک ایسے معاشی ماحول میں قوم کو بحران سے سرخرو ہو کر نکلنے کا مژدہ دے رہے ہیں جب پاکستان ملک کے موجودہ بحرانوں کی وجہ سے معیشت کو درپیش خطرات کا تدارک کرنے کے لیے پاکستان، انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ(آئی ایم ایف)سے سب سے بڑا 8 ارب ڈالر تک کا قرض حاصل کرنے کی تگ و دو میں ہے۔یاد رہے کہ اس سے قبل پاکستان آئی ایم ایف سے درجن سے زائد مالی تعاون کے پیکجز لے چکا ہے اور اس کا 6 ارب 40 کروڑ روپے کا آخری پیکج اگست 2016 میں مکمل ہوا تھا، جو آئی ایم ایف پر پاکستان کے کوٹے کا 216 فیصد تھا۔ اس حساب سے یہ پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا قرضہ ہوگا۔ ہم سمجھتے ہیں کہ حکومت کو گزشتہ حکومتوں کو مطعون کرنے کی بجائے اپنی پالیسیاں سامنے لا کر عوام کو متاثر ہونے سے بچانے کی سعی کرنی چاہئے لیکن فی الوقت کی صورتحال میں معاملہ الٹا چل رہا ہے۔ حکومت بوجھ اٹھانے کی بجائے بوجھ عوام پر ڈالنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے جس سے مہنگائی میں اتنا اضافہ ہوا ہے کہ عام آدمی کے لئے جسم و جاں کا رشتہ برقرار رکھنا مشکل ہوگیا ہے۔ گزشتہ حکومتوں کو تنقید کانشانہ بنانے میں کوئی سیاسی جماعت اس وقت تو حق بجانب ہوتی ہے جب اقتدار کی سٹیئرنگ اس کے ہاتھ میں نہیں آتی۔ ڈرائیونگ نشست سنبھالنے کے بعد یہ ڈرائیور کا امتحان ہوتا ہے کہ وہ کس مربوط طریقے سے گاڑی چلا کر منزل مقصود کی طرف بحفاظت و با سہولت گامزن ہوتا ہے۔ وزیر اعظم کا یہ بیان حیران کن سے بھی بڑھ کر ہے کہ آئی ایم ایف کے پاس جانے سے کوئی قیامت نہیں آتی۔ بلا شبہ دنیا کے مختلف ممالک بلکہ دنیا کا شاید ہی کوئی ملک ایسا ہوگا جو قرضے نہ لیتا ہو پاکستان بھی وقتاً فوقتاً آئی ایم ایف سے رجوع کرتا رہا ہے لیکن آئی ایم ایف کے حوالے سے وزیر اعظم اور ان کے وزیر خزانہ کا جو موقف چلا آرہا تھا اور اسی کے سبب عوام کو تحریک انصاف کی کامیابی میں امید کی کرن نظر آرہی تھی آج انہی لبوں سے آئی ایم ایف سے ملکی تاریخ کے سب سے بڑے قرضے کی وکالت کر رہے ہیں جو اس امر کے تعین کے لئے کافی ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت کے پاس اپنے پیشروئوں کے نقش قدم پر چلنے کے علاوہ کوئی اور منصوبہ نہیں۔ بہر حال یہ امر اطمینان کا باعث ضرور ہے کہ وزیر اعظم قوم کو وقتی مشکلات سے گھبرانے کی بجائے صبر و انتظار کی شرط پر اس بحران سے نکالنے کے لئے پر عزم ہیں۔ اس ضمن میں چھ ماہ کا وقت زیادہ عرصہ نہیں لیکن ان چھ ماہ میں کیا ایسے اقدامات کئے جائیں گے اور ایسی کیا حکمت عملی اختیار کی جائے گی کہ قوم اس معاشی بحران سے نکل آئے اس کی تفصیلات سے وزیر اعظم کو بذریعہ خطاب پارلیمنٹ کو ضرور آگاہ کرنا چاہئے تاکہ قوم حوصلہ اور برداشت سے نصف سال مزید سختیاں جھیلنے میں صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑے۔ملک معاشی بحران کا شکار ہو تو حکومت سے یہ توقع نہیں رکھی جاسکتی کہ وہ عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرے اس کے باوجود حکومت کی طرف سے کم آمدنی والے افراد کے لئے چھت کا انتظام کرنے کا منصوبہ حوصلہ افزاء امرضرور ہے لیکن ساتھ ہی اس امر پر بھی غور کرنے کی ضرورت ہے کہ ملک بھر کے عوام کی غالب ترین اکثریت مہنگائی کے ہاتھوں جس مشکل کا شکار ہے آخر کب تک وہ اسے سہار پائیں گے۔ حکومت کو جلد سے جلد ایسے طویل المدتی اقدامات کرنے ہوں گے جن کے نتیجے میں عام آدمی کو ریلیف بھلے نہ ملے لیکن کم از کم اسے مزید مہنگائی کا سامنا تو کرنا نہ پڑے۔

متعلقہ خبریں