Daily Mashriq

پشاور سمیت پختونخوا کے بیشتر علاقوں بارش،برفباری،نظام زندگی مفلوج

پشاور سمیت پختونخوا کے بیشتر علاقوں بارش،برفباری،نظام زندگی مفلوج

پشاور(نمائند گان مشرق)پشاور سمیت خیبرپختونخوا کے بیشتر علاقوں نوشہرہ'مردان'چارسدہ' صوابی 'کوہاٹ' ہنگو' کرک 'بنوں اور ڈی آئی خان میں میں وقفے وقفے سے بارش کا سلسلہ جاری ہے' گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران صوبے کے بالائی علاقوں میں مالاکنڈ، چترال، دیر،ایبٹ آباد،مانسہرہ،مالم جبہ،کالام، پاراچنار اور جنوبی وزیرستان میں برفباری کا سلسلہ جاری ہے جس سے موسم مزید سرد ہوگیا' برفباری کے باعث اکثر علاقوں میں سڑک بند ہوگئیں ،متعدد فیڈر ٹر پ کرگئے ،مکانات گرنے سے تین افراد زخمی ہوگئے۔ سڑکوں سے برف ہٹانے کاکام جاری ہے، ملک بھر میں بارش ،برفباری ودیگر حادثات میںگزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران اموات کی تعداد26 ہوگئی۔ پشاور اور گردونواح میں دوسرے روز کی بارش نے معمولات زندگی کو متاثر اور سڑکوں اور گلی محلوں کو پانی سے بھردیا ہے بارش اور تیز ہوا سے سردی کی شدت بڑھ گئی اور شدید ٹریفک جام بھی رہا جس نے شہریوں کو گھروں تک محدود کردیا پشاور کے علاوہ صوبے کے مختلف اضلاع دیر، سوات،کوہستان، شانگلہ، بونیر، مانسہرہ، ایبٹ آباد، مری اورگلیات میں بھی کہیں کہیں پر بارش اور شدید برف باری کا سلسلہ جاری رہا محکمہ موسمیات کے مطابق آج منگل کے روز بھی صوبہ کے بیشتر علاقوں میں موسم سرد اور خشک اور میدانی علاقوں میں رات اور صبح کے اوقات میں دھند پڑنے کا امکان ہے گذشتہ 24 گھنٹے کے دوران سب سے زیادہ بارش مالم جبہ میں59 ملی میٹر ، کالام میں 44 ملی میٹر ، دیر بالامیں36 ملی میٹر ، دیر زیریں میں 19ملی میٹر ، پاڑہ چنارمیں 22 ملی میٹر ، چترال اور پٹن میں21 ملی میٹر ، کاکول میں 18 ، سیدو شریف میں 15 ملی میٹر، بالاکوٹ میں14 ، ڈی آئی خان میں 8 ، تخت بہائی میں 7 ، پشاورمیں 7، بنوں اورچراٹ میں 3 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ اوگی شہرمیں شدیدبارش اورگردونواح کے پہاڑوں کھبل،ڈوگہ،تورغر،ڈوگہ ،شنگلی ،پنجہ گلی ،شہتوت ،چھجڑی پر برف نے ایک اور سفیدچادربھی اوڑھ لی، لوگ گھروں تک محدودہوکررہ گئے ۔ مردان اور گردونواح میں بھی شدیدبارش ہوئی۔چترال میں برفباری پیر کے روز بلا وقفہ سارا دن جاری رہا۔ جس کے نتیجے میں اپر چترال اور لوئر چترال دونوں اضلاع مکمل طور پر جام ہو گئے۔ چترال کا رابطہ ملک کے دوسرے حصوں سے منقطع رہا۔ گرم چشمہ روڈ پر مکھاڑ بوغدو اور روجی کے مقامات پر برف کے تودے آگرے۔لواری ٹنل ایریے میں 23 انچ، کالاش ویلیز میں 15 انچ، مڈکلشٹ 16 انچ، گرم چشمہ بونی 10 انچ، یارخون 14 انچ، مستوج 7 انچ، چترال شہر تقریبا ایک فٹ جبکہ ایون میں 6 انچ پیر کی شام تک ریکارڈ کی گئی ہے۔ بجلی کا نظام درہم برہم ہوگیا۔ باجوڑ میں شدید بارشوں سے رحمن آبادمیں مکان کی چھت گرنے سے ایک ہی خاندان کے تین افراد زخمی ہو گئے، نتھیاگلی سمیت گلیات میں برفباری کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری رہا ۔ رابطہ سڑکیں برفباری سے بند ہوگئیں۔ صوابی میں اتوار اور پیر کے در میانی شب سے شروع ہونے والی بارش کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری رہا پہاڑی علاقہ کوہ مہابن میں شدید برف باری ہوئی، لوئر دیر میں بارش اور پہاڑوں پر برف بار سے سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا ۔ہمیدان کلپانی ، شین غر، شاہی ، بن شاہی ، لڑم ٹاپ اور ،کمراٹ او رلواری ٹاپ پر برف باری سے رابطہ سڑکیں بند ہوگئیں۔ضلع شانگلہ میں برف باری کا سلسلہ جاری ہے ،پہاڑوں نے سفید چادر اوڑھ لی،ڈیرہ اسماعیل خان میںبارش سے موسم سرد ہوگیا، بارش کے باعث کئی فیڈر ٹرپ کر گئے،۔سوات میں دوسرے روز بھی بارش و برف باری کا سلسلہ جاری رہا۔ انتظامیہ نے سیاحوں کو گاڑی کے ٹائروں کو چین لگائے بغیر بالائی علاقوں میں جانے سے منع کیا ہے۔ مینگورہ کے محلہ مکان باغ میں بارشوں کی وجہ سے باڑہ کی چھت گرنے سے ایک مویشی ہلاک اور سولہ کو بچالیا گیا۔ شمالی وزیرستان کے طول و عرض میں بارش ، برفباری اور شدید سردی نے اسی سالہ ریکارڈ توڑ دیا ۔ میرعلی اور میرانشاہ جیسے میدانی علاقوں میں بھی درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے گر گیا ۔ہر طرف سفیدی چھائی ہوئی ہے۔ شمالی وزیرستان کے علاقے شوال اور رزمک میں دو فٹ تک برف پڑی، کئی مقامات پر ندی نالے منجمد ہو گئے ہیں ۔ عمر رسیدہ قبائلی حاجی شیر بہادر نے مشرق کو بتایا کہ گذشتہ اسی سال میں اتنی سردی نہیں دیکھی ہے ۔ میرعلی اور میرانشاہ میں درجہ حرارت منفی 2تک گر گیا ہے جبکہ رزمک اور شوال میں منفی دس تک درجہ حرارت گرچکا ہے ۔ شا نگلہ میں شدید برف باری سے نظام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ،کئی کچے مکانات گر گئے۔ وادی شا نگلہ میں درجہ حرارت نقطہ انجماد سے گر گیا۔ پیرکو شدید برف باری کے بعدالپوری میں نظام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی۔مختلف ٹریفک حادثات میں کئی افرادزخمی جبکہ سڑکوں میں گاڑیوں کی پھسلن سے گاڑیاں پھنس گئیں ۔ ضلع اورکزئی کے لوئر اور اپر تحصیلوں کے علاقوں کلایہ،منی خیل،ڈبوری،ماموں زئی،علی شیر زئی،دپر کلی،غنڈی کلی میں صنح سے برفباری سے سردی میں اضافہ جبکہ متعدد علاقوں میں سڑکیں بند ہوگئیں ۔ کوئٹہ میںبرفباری کے باعث درجنوں گاڑیاں پھنس گئیں جس کے باعث مسافروں کو شدید مشکلات کاسامناہے۔

متعلقہ خبریں