جیل میں ٹرائل دہشتگردوں کا ہوتا ہے،نگران حکومت، نیب،متعلقہ ادارے کیا پیغام دینا چاہتے ہیں،شہباز شریف

14 جولائی 2018 (16:17)

ویب ڈیسسک:جیل میں ٹرائل انصاف کی دھجیاں اڑانے کے مترادف ہے،حکومت اور انتظامیہ کو ہوش کے ناخن لینے چاہئیں،شہباز شریف۔

صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف نے نواز شریف اور مریم نواز کی گرفتاری کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کل نوازشریف اور مریم نواز کو لاہور ایئرپورٹ سے گرفتار کر کے اڈیالہ جیل منتقل کردیا گیا ہے۔ جیل میں ٹرائل انصاف کی دھجیاں اڑانے کے مترادف ہے، جیل میں ٹرائل دہشت گردوں کا ہوتا ہے۔ جیل میں ٹرائل قانون و آئین سے متصادم ہے، حکومت اور انتظامیہ کو ہوش کے ناخن لینے چاہیئں۔ نگران حکومت، نیب اور متعلقہ ادارے کیا پیغام دینا چاہتے ہیں۔

شہباز شریف نے مزید کہا کہ نوازشریف کی وطن واپسی کے موقع پر پورا لاہور سڑکوں پر تھا۔ لاکھوں لوگ نوازشریف کیلئے فرش راہ تھے اور ایئرپورٹ جانے کیلئے ترس رہے تھے۔ لوگ خود آئے تھے، انہیں زور سے نہیں لایا گیا تھا۔ چھوٹے چھوٹے بچے بھی استقبال کیلئے موجود تھے۔ اپنی سیاسی زندگی میں ایسی جوشیلی ریلی نہیں دیکھی۔ محبوب قائد کے استقبال کے لیے نکلنے والوں کا شکرگزار ہوں۔

انہوں نے مزید کہا کہ نگران حکومت نے خوف کی صورتحال پیدا کی، ہمارے سینکڑوں کارکنوں کوگرفتارکیا گیا، ناکے لگائے گئے۔ پنڈی، پشاور، گوجرانوالہ اور ساہیوال سے آنے والے قافلوں کو روکا گیا۔ خواتین، بزرگ، نوجوان اور محنت کشوں کا ریلی میں آمد پرشکر گزار ہوں۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ میری تمام لیڈر شپ کیخلاف مقدمات درج کرکے دہشت گردی کی دفعات بھی لگاگئی ہیں، میرا نام بھی شامل لیکن میرا نام چھوڑ دیں، شاہد خاقان عباسی جیسے شخص پر مقدمہ درج ہوا جو کسی کو دھکا تک نہیں مار سکتے۔ کارکن انتخابی جلسوں میں کالی پٹیاں باندھ کر احتجاج کریں گے۔ انصاف کا دروازہ کھٹکھٹائیں گےاور بار بار دستک دیں گے۔ نوازشریف اور مریم نواز کی جیل منتقلی کے بعد تمام آپشن استعمال کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت نشانے پر صرف مسلم لیگ ن کا ورکر ہے، اگر اسی طرح ہم نے چلنا ہے تو پھر ملک کا خدا حافظ ہے۔

مزیدخبریں