Daily Mashriq

سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر فیض محمد فیضی نے ایکسل لوڈ ریجیم پر تحفظات کا اظہار کردیا

سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر فیض محمد فیضی نے ایکسل لوڈ ریجیم پر تحفظات کا اظہار کردیا

پشاور: سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر فیض محمد فیضی نے ایکسل لوڈ ریجیم پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ اس پالیسی میں نرمی لائی جائے اور صوبہ خیبر پختونخوا کو دوسرے صوبوں کی طرح سہولیات فراہم کی جائیں ۔خیبر پختونخوا کی انڈسٹر ی پہلے ہی زبوں حالی کا شکار ہے جبکہ حکومت کی جانب سے کاروبار دشمن پالیسیوں کے نافذ العمل ہونے سے رہی سہی انڈسٹری اور ٹرانزٹ ٹریڈ کا کاروبارمزید متاثر ہو رہا ہے ۔ 

کارگو ٹرین کی بحالی تک ایکسل لوڈ ریجیم کو موخر کیا جائے اور صوبہ خیبر پختونخوا کے ساتھ امتیازی سلوک بند کیا جائے۔ ملک کے دیگر صوبوں کی انڈسٹریز کی طرح خیبر پختونخوا کی انڈسٹری کو برابری کی بنیاد پر سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے ۔ 

 ہم مراعات نہیں چاہتے بلکہ خیبر پختونخوا کو اس کا آئینی حق دیا جائے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے وفاقی وزارت مواصلات کی ٹیم جاوید منصور اور سید عاصم حسین سے نیشنل فریٹ اینڈ لاجسٹک پالیسی کے حوالے سے مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

 اس موقع پر انڈسٹریلسٹ ایسوسی ایشن حیات آباد کے صدر زرک خان ‘ سرحد چیمبر کے سابق صدر ملک نیاز احمد اورسابق سینئر نائب صدر انجینئر مقصود انور پرویز بھی موجود تھے۔سرحد چیمبر کے صدر فیض محمد فیضی نے کہاکہ پاکستان ریلوے کارگو سروس کو صرف پنجاب اور کراچی تک محدود رکھنے سے خیبر پختونخوا کی انڈسٹری کو کافی نقصانات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ 

انہوں نے کہاکہ خیبر پختونخوا جغرافیائی لحاظ اور پورٹ سے دوری کی وجہ سے یہاں کی انڈسٹری پہلے ہی متاثر ہے اور دہشت گردی نے بھی کاروبار اور صنعت کو کافی نقصان پہنچایا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کو پالیسیاں مرتب کرنے سے قبل تمام چیمبرز اور سٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لینا چاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ خیبر پختونخوا کی انڈسٹری کے ساتھ امتیازی سلوک فوری طور پر ختم کیا جائے ۔ 

انہوں نے کہاکہ ایکسل لوڈ ریجیم سے صنعتوں کی پیداواری لاگت میں کافی اضافہ ہوا ہے جس سے خیبر پختونخوا کی انڈسٹری دوسرے صوبوں کی انڈسٹریز سے مسابقت نہیں کرسکتی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ خیبر پختونخوا سستی بجلی اور گیس پیدا کرنے کے باوجود اس صوبہ کے عوام ‘ انڈسٹریل ‘ کمرشل صارفین پر مہنگے داموں فروخت کی جاتی ہے جو کہ سراسر ناانصافی ہے ۔ 

انہوں نے کہاکہ جب تک کارگو ٹرین خیبر پختونخوا کیلئے بحال نہیں کی جاتی تب تک ایکسل لوڈ ریجیم میں نرمی لائی جائے ۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں وہ سہولیات دی جائیں جو ملک کے دوسرے صوبوں کی انڈسٹریز کو فراہم کی جا رہی ہیں۔انڈسٹریلسٹ ایسوسی ایشن حیات آباد کے صدر زرک خان نے اس موقع پر حکومت سے مطالبہ کیا کہ کراچی سے طورخم تک کارگوٹرین بحال کی جائے اور کنٹینرائزیشن پالیسی میں مزید نرمی لائی جائے ۔ 

انہوں نے خیبر پختونخوا کی انڈسٹری کو دیگر صوبوں کی انڈسٹریز کی طرح برابری کی بنیاد پر سہولیات فراہم کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔ اجلاس سے ملک نیاز احمد اور انجینئر مقصود انور پرویز نے بھی خطاب کرتے ہوئے نیشنل فریٹ اینڈ لاجسٹک پالیسی کو مزید مربوط بنانے کے لئے مختلف تجاویز اور سفارشات پیش کیں ۔

متعلقہ خبریں