Daily Mashriq

نابینا تیراک جس نے 52 میڈلز جیت لیے

نابینا تیراک جس نے 52 میڈلز جیت لیے

استنبول: ترکی کے باہمت نابینا تیرک نے 52 میڈل جیت کر ناقابلِ یقین کو یقین میں بدل کر ثابت کیا کہ اگر ہمت اور حوصلہ بلند ہو تو کسی بھی منزل تک پہنچنا مشکل نہیں ہے۔

 رپورٹ کے مطابق ترکی سے تعلق رکھنے والے 41 سالہ نابینا شخص نے 6 سال کے دوران تیراکی کے  مختلف مقابلوں میں حصہ لے کر 52 میڈلز اپنے نام کیے۔

ترکی کے شمال مغربی صوبے سکریہ کے نابینا نوجوان فدائی زل کا کہنا تھا کہ ’میں نے اپنے دوست کے مشورے پر تیراکی شروع کی اور پھر اسے روزانہ کی بنیاد پر سوئمنگ کی‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ میں نے تیراکی کو باقاعدہ شعبے کے طور پر اختیار کرنے کا فیصلہ کیا اور پھر روزانہ چالیس کلومیٹر تیراکی کی تاکہ مقابلوں میں حصہ لے سکوں۔

فدائی زل نے اپنے پہلے مقابلے میں ریکارڈ بنایا اور پھر ہر سال ہی ایک میڈل اپنے نام کیا۔ اُن کا کہنا تھا کہ میں نے 15 سے 20 دن کی تربیت لینے کے بعد سب سے پہلے ترک سوئمنگ چیمپئن شپ میں حصہ لیا اور 36.14 سیکنڈ میں اپنے ہدف پر پہنچ کر نہ صرف تمام ریکارڈ توڑے بلکہ پہلا اعزاز اپنے نام کیا۔

فدائی کے مطابق میں یورپین اور ورلڈ چیمپئن شپ میں حصہ لینے کا خواہش مند ہوں مگر بصارت سے محرومی کی وجہ سے مقابلوں میں حصہ نہیں لے سکتا، میری خواہش ہے کہ اولمپیک گیمز میں بھی ترکی کی نمائندگی کروں۔

نوجوانوں سے اپیل کرتے ہوئے اُن کا کہنا تھا کہ اپنی زندگی میں متحرک رہیں اور کسی ایتھیلیٹ کو رول ماڈل بنائیں۔ فدائی کا کہنا تھا کہ ’میری خواہش ہے کہ نوجوان یہ بات بولیں کہ جب فدائی زل یہ کر سکتا ہے تو ہم بھی ہر کام کرسکتے ہیں‘۔

متعلقہ خبریں