Daily Mashriq

سندھ کے 76 ہزار سینیئر سرکاری افسران ٹیکس ریٹرن فائل نہیں کرتے

سندھ کے 76 ہزار سینیئر سرکاری افسران ٹیکس ریٹرن فائل نہیں کرتے

وفاقی بورڈ آف ریوینیو نے انکشاف کیا ہے کہ سندھ حکومت کے 76 ہزار سینیئر سرکاری افسران انکم ٹیکس ریٹرن فائل نہیں کرتے۔ حکام جنہوں نے ریٹرنز فائل نہیں کیے، نے انکم ٹیکس آرڈیننس 2001 کی خلاف ورزی کی۔

ریٹرن فائل نہ کرنے والے ان افسران کا تعلق گریڈ 18 سے 20 کے درمیان ہے۔

کمشنر ان لینڈ ریوینیو عاطف علی نے چیف سیکریٹیری سندھ سید ممتاز علی شاہ کی توجہ اکاؤنٹنٹ جنرل کے دفتر سے حاصل ہونے والے ڈیٹا کی طرف دلائی۔

ڈیٹا کے مطابق 93 ہزار سرکاری ملازمین ٹیکس ادا کرنے والی آمدنی کما رہے ہیں تاہم صرف 17 ہزار ٹیکس ریٹرنز فائل کیے ہیں۔

چیف سیکریٹری کو بھیجے گئے خط میں کمشنر نے انہیں بتایا کہ افسران انکم ٹیکس قوانین کی خلاف ورزی کر رہے ہیں جو ٹیکس ادا کرنے والی آمدنی کمانے والے ہر فرد سے ریٹرن فائل کرنے کا کہتا ہے۔

تاہم یہ بات بھی سامنے آئی کہ زیادہ تر ملازمین، جن میں گریڈ 20 کے افسران بھی شامل ہیں، کا ماننا ہے کہ انکم ٹیکس ان کی تنخواہ میں سے پہلے ہی کاٹ لی جاتی ہے تو ریٹرن فائل کرنا ضروری نہیں ہے۔

چیف سیکریٹری کی توجہ اس غلط فہمی کی طرف بھی دلائی اور ان سے درخواست کی کہ تمام افسران کو ہدایت جاری کریں کہ ریٹرن فائل کرکے قانونی تقاضے پورے کریں۔

متعلقہ خبریں