Daily Mashriq

مالی سال 20-2019: سندھ کیلئے 12 کھرب 18 ارب روپے کا بجٹ پیش

مالی سال 20-2019: سندھ کیلئے 12 کھرب 18 ارب روپے کا بجٹ پیش

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے آئندہ مالی سال 2019-20 کے لیے صوبے کا 12 کھرب 18 ارب روپے کا بجٹ پیش کردیا۔

سندھ اسمبلی کا اجلاس اسپیکر آغا سراج درانی کی زیر صدارت ہوا جس میں وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے سندھ کابینہ سے منظوری کے بعدصوبائی اسمبلی میں بجٹ پیش کیا۔

بجٹ پیش کرتے ہوئے مراد علی شاہ نے کہا کہ ہم عوام کے خادم اور نمائندے ہیں ، ناخواندگی اور بیماریوں کو ترقی کی راہ میں رکاوٹ نہیں بننے دیں گے۔

وزیراعلیٰ مراد علی شاہ کی تقریر کے دوران اپوزیشن کی جانب سے سندھ حکومت کے خلاف ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا کر شدید احتجاج کیا گیا۔

اجلاس کے دوران اپوزیشن کی جانب سے ’ گو گو ‘ اور ’ نو نو‘ کے نعرے لگائے گئے اور پانی فراہم کرنے اور ایڈز کا خاتمہ کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔

تاہم ایوان میں احتجاج کے دوران وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے حکومتی اراکین کے حصار میں بجٹ تقریر جاری رکھی۔

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بجٹ تجاویز پیش کرتے ہوئے آئندہ مالی سال اخراجات کا تخمینہ 12 کھرب 18 ارب روپے بتایا۔

بجٹ تقریر میں ان کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کو وفاقی حکومت سے 835 ارب روپے ریونیو کی مد میں وصول ہونے کی توقع ہے جبکہ صوبائی ریونیو سے 355 ارب روپے حاصل ہوں گے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) سے وصولیوں کا ہدف 145 ارب روپے طے کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ مالی سال کے لیے ترقیاتی بجٹ کے لیے 2 سو 83 ارب 50 کروڑ روپے مختص کیے گیے ہیں جس میں ضلعی اور صوبائی سالانہ ترقیاتی پروگرام کے لیے 228 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں