امریکا میں مسلمانوں کے خلاف جرائم میں تیزی,

امریکا میں مسلمانوں کے خلاف جرائم میں تیزی,

ڈیسک:امریکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق، قانون نافذ کرنے والے اداروں کو رپورٹ کیے جانے والے واقعات کے اعداد ظاہر کرتے ہیں کہ 2014 کے مقابلے میں 2015 میں نفرت پر مبنی جرائم میں 6.7 فیصد اضافہ ہوا اور واقعات کی تعداد 5479 سے 5850 تک تجاوز کرگئی۔

واضح رہے کہ یہ تعداد 2000 کےآغاز میں سامنے آنے والے واقعات سے کافی کم ہے تاہم ایف بی آئی کی یہ رپورٹ اس وقت سامنے آئی ہے جب صدارتی انتخاب کے بعد امریکا میں قومیت اور مذہب کے نام پر حملوں کے کئی واقعات سامنے آچکے ہیں۔

ایف بی آئی کی تازہ رپورٹ سال 2015 میں ہونے والے جرائم کا احاطہ کرتی ہے جس میں پیرس، سان برنارڈینو، کیلی فورنیا میں ہونے والے دہشت گرد حملوں سمیت ری پبلکن امیدوار ڈونلد ٹرمپ کی جانب سے امریکا میں مسلمانوں کی داخلے پر پابندی کے بیان شامل ہیں، تاہم یہ تمام واقعات سال کے آخری 2 ماہ میں پیش آئے ہیں۔

ناقدین کے مطابق، ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان نے مسلم مخالف جذبات کو مزید ابھارا۔

واضح رہے کہ امریکی انتخابات میں دونلڈٹرمپ کی کامیابی کے بعد   مسلم خواتین پر  حملے  ہونے کی خبریں سامنے آئی ہیں۔

متعلقہ خبریں