Daily Mashriq


لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی کی ممکنہ گرفتاری سے روک دیا

لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی کی ممکنہ گرفتاری سے روک دیا

لاہور ہائی کورٹ نے خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق کی ضمانت قبل از وقت گرفتاری منظور کرتے ہوئے نیب کو انہیں 24 اکتوبر تک ممکنہ گرفتاری سے روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی خواجہ سلمان رفیق کی  ضمانت کی درخواستوں پر سماعت ہوئی۔

درخواست گزار کے وکیل کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ نیب میں پیراگون سٹی سےمتعلق انکوائری چل رہی ہے اور ان کے موکل نیب کے ساتھ مکمل تعاون کررہے ہیں، نیب نے جو ریکارڈ مانگا وہ فراہم کیا ہے، نیب لوگوں کو انکوائری کے لیے بلاتا ہے اور گرفتار کر لیتا ہے، خدشہ ہے کہ نیب کی جانب سے ان کے موکلوں کو بھی گرفتار کر لیا جائیگا، عدالت سے استدعا ہے کہ نیب کو ممکنہ گرفتاری سے روکا جائے۔

 لاہورہائی کورٹ نے سعد رفیق اور سلمان رفیق کی 5 ، 5 لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض 24 اکتوبر تک عبوری ضمانت منظور کرلی۔ عدالت نے نیب کو خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق کو گرفتار کرنے سے روکتے ہوئے اپنی تحقیقات جاری رکھنے کی اجازت دے دی۔ عدالت نے درخواست ضمانت پر فریقین کو نوٹس بھی جاری کر دیئے۔

متعلقہ خبریں